The news is by your side.

Advertisement

ماحولیاتی آلودگی، جاپانی حکومت کا کاربن اخراج میں مزید کمی لانے کا فیصلہ

ٹوکیو: ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کے لیے جاپانی حکومت نے اہم اقدامات کرتے ہوئے کاربن اخراج میں مزید کمی لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جاپان نے توانائی کے متبادل ذارئع کے ساتھ جوہری انرجی پر بھی توجہ برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے، جس کے ذریعے موحولیات دوست اقدامات کو یقینی بنانے پر زور دیا گیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ جاپانی وزیر اعظم شینزو آبے کی کابینہ کے اجلاس میں کاربن گیسوں کے اخراج میں مزید کمی لانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے اب توانائی کے متبادل ذارئع کے ساتھ جوہری انرجی پر بھی توجہ برقرار رکھی جائے گی، جمعہ سات جون کو ہونے والے کابینہ کے اجلاس میں انرجی وائٹ پیپر (قرطاس ابیض برائے توانائی) کو حکومتی ترجیحات کا حصہ بنانے پر اتفاق کیا گیا۔

اس دستاویز میں زیر زمین حاصل کیے جانے والے ایندھن پر بتدریج انحصار کم کرنے کو اہم قرار دیا گیا ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ سن 2011 کے زلزلے کے بعد سونامی کی لپیٹ میں آ کر فوکوشیما کے جوہری پلانٹ کو جہاں تباہی کا سامنا رہا وہاں تابکاری پھیلنے سے قریبی علاقہ متاثر بھی ہوا تھا۔

خبردار، ماحولیاتی آلودگی آپ کی ذہانت کو شدید متاثر کرسکتی ہے

ایک تحقیق کے مطابق فضائی آلودگی سالانہ 70 لاکھ افراد کو متاثر کرتی ہے اور اکثر معاملات میں‌جان لیوا ثابت ہوتی ہے، دنیا کی 91 فی صد آبادی کو آج سانس لینے کے لیے صاف فضا میسر نہیں ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں