The news is by your side.

Advertisement

ٹویٹر کے مشہور قاتل کو سزائے موت

ٹوکیو: جاپان کی عدالت نے ٹویٹر کے ذریعے لوگوں کو پھنسا کر قتل کرنے والے شخص کو سزائے موت سنا دی۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق ’ٹویٹر کلر‘ کے نام سے مشہور ہونے والے جاپانی شہری ہیرشیرائشی کو پولیس نے 2017 میں اُس وقت گرفتار کیا تھا جس اُس کے فلیٹ سے انسانی اعضاء برآمد ہوئے تھے۔

تیس سالہ ٹویٹر کلر نے عدالت میں جج کے رو بہ رو پیش ہوکر اپنے جرم کا اعترارف کیا اور بتایا تھا کہ اُس نے ٹویٹر کی مدد سے 9 لوگوں سے دوستی کی اور پھر انہیں گھر بلا کر ذبح کردیا۔

ہیرشیرائشی نے جج کے سامنے اعتراف کیا تھا کہ اُس نے 8 خواتین سمیت 9 افراد کو اپنے جال میں پھنسایا اور پھر انہیں گھر بلا کر تیز دھار آلے کی مدد سے قتل کیا۔

جاپان کی عدالت نے اکتوبر میں کیے جانے والے اعتراف کے بعد کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا تھا جس آج سنایا گیا، عدالت نے ہیرشیرائشی عرف ٹویٹر کلر کو سزائے موت کا حکم دیا۔

مقامی میڈیا رپورٹ کے مطابق منگل کے روز عدالتی سماعت کو 400 لوگوں نے دیکھا جبکہ کمرۂ عدالت میں صرف 16 نشتیں موجود تھیں۔

واضح رہے کہ جاپان میں قتل کو سنگین جرم قرار دیا جاتا ہے، ملکی قانون کے مطابق کسی سنگین جرم میں ملوث شخص کو ہی پھانسی دی جاتی ہے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق ٹویٹر کلر زیادہ تر اُن لوگوں سے دوستی کرتا تھا جو خودکشی کی خواہش رکھتے تھے، اُن سے تعلقات قائم کرنے کے بعد وہ اپنے گھر پر انہیں مدعو کرتا اور پھر قتل کردیتا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں