The news is by your side.

Advertisement

روسی حملے سے جاپانی کمپنیاں بڑی مشکل میں پڑ گئیں

ٹوکیو: یوکرین پر روسی حملے سے جاپانی کمپنیاں بڑی مشکل میں پڑ گئی ہیں، جاپانی کمپنیوں کو یہ مضبوط خدشہ لاحق ہے کہ روسی حملے کے باعث ان پر بالواسطہ اثرات پڑیں گے۔

غیر ملکی تجارت کے حوالے سے جاپان کی ایک تنظیم ’جیٹرو‘ نے روسی حملے کے اگلے دن ایک سروے کیا تھا، جس میں 89 کمپنیوں کو شامل کیا گیا تھا، تنظیم کا کہنا ہے کہ یوکرین پر حملے کے باعث جاپانی کمپنیاں روس کے ساتھ تعلقات برقرار رکھنے یا نہ رکھنے کے معاملے پر تذبذب کا شکار ہیں۔

فروری کے اواخر میں کیے گئے اس جائزے سے معلوم ہوا تھا کہ روس میں کسی بھی قسم کی موجودگی رکھنے والی جاپانی کمپنیوں کی 90 فی صد تعداد کو یقین ہے کہ وہ روس پر عائد کی جانے والی پابندیوں سے متاثر ہوں گی۔

87 فی صد کمپنیوں کو یقین ہے کہ بین الاقوامی پابندیوں سے ان کے کاروبار پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ 71 فی صد کو خدشہ تھا کہ روبل کی کمزور قدر، خوردہ قیمتوں کو متاثر کرے گی، جب کہ 52 فی صد نے اس امکان کا اظہار کیا کہ اُنھیں باہر سے آنے والی ادائیگیوں اور رقوم کی بین الاقوامی ترسیلات میں مشکلات پیش آئیں گی۔

39 فی صد کمپنیوں نے کہا کہ روس کا امیج خراب ہونے کے باعث انھیں تبدیلیاں کرنی پڑیں گی۔ بعض بڑی کمپنیاں اقدامات کا آغاز بھی کر چکی ہیں۔ سونی، ہٹاچی، شِسے دو اور یُونی کلو کی منتظم کمپنیوں، سب نے مال کی ترسیل روکنے، روس میں اپنی مصنوعات کی فروخت بند کرنے یا وہاں پر پیداوار کو معطل کرنے جیسے اقدامات کیے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں