The news is by your side.

Advertisement

جاپانی کرنسی تشویش ناک حد تک گر گئی

ٹوکیو: جاپانی کرنسی تشویش ناک حد تک گر گئی، کرنسی کی قدر 20 سال کی کم ترین سطح پر آ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق جاپانی ین کی قدر ڈالر کے خلاف 128 ین سے نیچے تک گر کر تقریباً 20 سال کی کم ترین سطح پر پہنچ گئی۔

ٹوکیو میں منگل کے روز ین، ڈالر کے مقابلے میں گر کر 128 ین سے نیچے چلا گیا، یہ سطح مئی 2002 کے بعد نہیں دیکھی گئی تھی۔

جاپان کے وزیر خزانہ شونیچی سوزوکی نے منگل کے روز کہا کہ معیشت کو ین کی کمزوری سے پہنچنے والا نقصان بہت زیادہ ہے، اور معیشت کے فوائد بھی اس سے کم ہیں، یہ صورت حال ہمیں ڈالر کے مقابلے میں ین کی حالیہ گراوٹ کے سلسلے میں خبردار کر رہی ہے۔

ین کی گراوٹ نے عالمی اجناس اور تیل کی قیمتوں میں اضافے کے درمیان جاپان میں درآمدی افراط زر کے دباؤ کو مزید شدید کر دیا ہے۔

سرمایہ کاروں نے اس توقع پر ڈالر خریدے اور ین فروخت کیے کہ فیڈرل ریزرو زری پالیسی کو مزید سخت کرے گا۔ بہت سے سرمایہ کار شرط لگا رہے ہیں کہ ین کی قیمت مزید گرنے والی ہے۔

منڈی ذرائع نے اس خیال کی نشان دہی کی ہے کہ ڈالر کی خریداری میں اب مزید تیزی آئے گی کیوں کہ خام تیل کی قیمتوں میں ایک بار پھر اضافے کا رجحان ہے، اُن کا کہنا ہے کہ یہ ین کی قدرمیں کمی کا ایک اور عنصر ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں