The news is by your side.

Advertisement

جاپانی شہزادی نے محل ٹھکرا کر عام آدمی سے شادی کر لی

ٹوکیو: جاپانی شہزادی ماکو نے محل کا عیش و آرام ٹھکرا کر عام آدمی سے شادی کر لی۔

تفصیلات کے مطابق شہزادی ماکو نے آخر کار شاہی خاندان، رتبہ اور دولت ٹھکرا کر اپنے محبوب اور سابقہ ہم جماعت کیے کومورو سے شادی کر لی، کومورو سے ان کی ملاقات 2012 میں ٹوکیو کی ایک یونیورسٹی میں ہوئی تھی، جس کے بعد 2017 میں ان کی منگنی ہوئی تاہم شادی میں کئی رکاوٹیں درپیش تھیں۔

جاپانی قوانین کے تحت اگر شاہی خاندان کی کوئی خاتون رکن کسی عام آدمی سے شادی کرنے کا فیصلہ کرتی ہے تو اسے شاہی رتبے سے دست بردار ہونا پڑتا ہے، یہ قانون صرف شاہی خاندان کی خواتین پر لاگو ہوتا ہے، جب کہ مردوں کو اس سے استثنیٰ حاصل ہے۔

شاہی روایات کے مطابق جب شاہی خاندان کی کوئی خاتون رکن شادی کے بعد محل سے رخصت ہوتی ہے، تو اسے 13 لاکھ ڈالرز دیے جاتے ہیں، تاہم شہزادی ماکو نے شاہی خاندان سے ملنے والے 13 لاکھ ڈالرز کی رقم وصول کرنے سے بھی انکار کر دیا ہے، یوں وہ شاہی رتبے اور شادی پر ملنے والی دولت دونوں کو ٹھکرا دینے والی جاپان کے شاہی خاندان کی پہلی خاتون بن گئی ہیں۔

توقع ہے کہ شادی کے بعد یہ نوبیاہتا جوڑا امریکا منتقل ہو جائے گا جہاں کیے کومورو بطور وکیل کام کریں گے۔ دوسری طرف پرنسز ماکو نے، جنھوں نے حال ہی میں ٹوکیو یونیورسٹی کے میوزیم میں ریسرچر کی ملازمت چھوڑی ہے، اپنے مستقبل کے منصوبے سے متعلق کچھ نہیں بتایا ہے کہ وہ نیویارک میں کیا کریں گی۔

اس جوڑے کی نقل و حمل کو مقامی میڈیا میں بہت زیادہ کوریج دی جا رہی ہے، ان کی شادی کا برطانوی شہزادے ہیری اور میگھن مارکل کی زندگی سے بھی موازنہ کیا جا رہا ہے، اور دونوں کو ’جاپان کا ہیری اور میگھن‘ کہا جا رہا ہے۔

توقع ہے کہ یہ جوڑا جمعرات کو ایک نیوز کانفرنس کرے گا جہاں وہ اپنی شادی اور مستقبل کے پلان سے متعلق بیان دیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں