The news is by your side.

Advertisement

ایران کوئی جوہری بم نہیں بنا رہا، جواد ظریف

نیویارک: ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے کہا ہے کہ امریکا کو کبھی بھی یہ خدشہ نہیں ہونا چاہئے کہ ایران جوہری بم بنا رہا ہے، ایران کوئی جوہری بم نہیں بنا رہا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیویارک میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، جواد ظریف نے کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ کے پاس جوہری معاہدہ ختم کرنے کا آپشن موجود ہے لیکن اگر اس طرح کا کوئی بھی اقدام اٹھایا گیا تو انہیں اس کے نتائج بھگتنا ہوں گے، ایران اپنی قومی سلامتی کے لیے ہر قسم کے فیصلے کرے گا۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ اگر امریکا 2015 کے تاریخی جوہری معاہدے کو ختم کرے گا تو ایران بھرپور طریقے سے یورینیم کی افزودگی کا عمل دوبارہ شروع کرنے کے لیے تیار ہے۔

جواد ظریف کا کہنا تھا کہ گزشتہ 15 ماہ میں امریکا کئی بار جوہرے معاہدے کی خلاف ورزی کرچکا ہے اور ہم سمجھتے ہیں کہ ایسا ملک ایران سے مزید مطالبات کی پوزیشن میں نہیں ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران، امریکا سے مذاکرات کے لیے تیار ہے لیکن امریکا کو اپنے رویے میں تبدیلی لانا ہوگی، امریکا دھمکیاں دینا بند کرے ایران دھمکیوں سے ڈرنے والا نہیں ہے۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو ایران سے ہونے والے جوہرے معاہدے کی 12 مئی کو تجدید کرنا ہے تاہم اس حوالے سے ٹرمپ نے واضح کیا تھا کہ وہ معاہدے کی تجدید کے لیے دستخط نہیں کریں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں