site
stats
اے آر وائی خصوصی

جیتو پاکستان کے نام پرخاتون رکن اسمبلی کونوسربازوں کا جھوٹا میسج

nighat orakzai

پشاور : اے آر وائی ڈیجیٹل کے مقبول ترین گیم شو جیتو پاکستان کی بڑھتی ہوئی مقبولیت کو دیکھتے ہوئے نو سربازوں نے عوام کو موبائل فون پر جھوٹے پیغامات بھیجنے کا سلسلہ شروع کیا ہوا ہے، جس میں انعامات اور پروگرام میں شرکت کی نوید سنائی جاتی ہے۔

اے آروائی نیوز کے نمائندے ظفر اقبال کے مطابق نو سر بازوں نے خیبرپختونخوا کی خاتون رکن اسمبلی نگہت اورکزئی کو بھی ایک ٹیکسٹ میسج بھیج دیا، جس میں ان کو گیم شو جیتو پاکستان کی طرف سے ایک نئی ہنڈا کار اور دس تولے سونا نکلنے پر مبارکباد دی گئی تھی اور نیچے لکھے گئے نمبر پر رابطہ کرنے کا کہا گیا تھا۔

جعل سازوں کی طرف سے ملنے والے اس برقی پیغام کے بعد خیبرپختونخوا کی خاتون رکن اسمبلی نگہت اورکزئی نے کیا کیا خواب دیکھے وہ ان کی زبانی سنیے۔

اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے نگہت اورکزئی کا کہنا تھا کہ ایک سیاسی کارکن اور رکن اسمبلی ہونے کی وجہ سے موبائل فون پر آنے والے ٹیکسٹ میسجز اکثر ناگوار ہی گزرتے ہیں۔

مگر اس دن جب موبائل فون پر میسج کی ٹون بجی اور نہ چاہتے ہوئے بھی میسج پڑھنا شروع کیا تو پہلی لائن پڑھتے ہی دل کی دھڑکن تیز ہونا شروع ہوگئی کیونکہ میسج ہی ایسا تھا کہ تجسس اور خوشی کے ملے جلے تاثرات میں دل تیزی کے ساتھ دھڑک رہا تھا۔

وہ پیغام سے زیادہ ایک خوشخبری تھی جس میں پاکستان کے مقبول ترین گیم شو جیتو پاکستان کی طرف سے ایک نئی ہنڈا کار اور دس تولے سونا نکلنے پر مجھے مبارک باد دی گئی تھی اور نیچے لکھے گئے نمبر پر رابطہ کرنے کا کہا گیا تھا۔

میسج دیکھ کر بہت خوش تھی کہ دس تولہ سونا ملے گا تو کڑے بنا کر بیٹی کیلئے رکھ لوں گی اور کار اپنے استعمال میں آجائے گی لیکن حقیقت جان کر بہت افسوس ہوا کہ یہ لوگ تیس ہزار لے کر لوگوں کو لوٹتے ہیں، لہٰذا اے آر وائی اس کا بھی نوٹس لے کر کارروائی کرے۔

انتباہ

واضح رہے کہ اے آر وائی نیٹ ورک کے مقبول ترین گیم شو جیتو پاکستان کے نام پر جعل ساز گروپس کس طرح سرگرم ہیں اس کا اندازہ پڑھنے اور دیکھنے والے تمام قارئین اور ناظرین کو اچھی طرح معلوم ہوگیا ہوگا۔

کیونکہ اے آر وائی نیٹ ورک کے فیملی ممبرز سمیت ملک بھر میں شاید ہی کوئی ایسا شخص ہو جس کے پاس موبائل فون ہو اور اسے جعل سازوں کی طرف سے یہ پیغام نہ آیا ہو۔

اے آر وائی نیٹ ورک اور جیتو پاکستان کے نام کو استعمال کرتے ہوئے یہ جعل ساز گروہ کئی سادہ لوح پاکستانیوں کو ہزاروں روپے کا نقصان پہنچا چکے ہیں، کیونکہ اے آر وائی اور جیتو پاکستان تو ملک بھر میں نام ہی اعتماد کا ہے۔

لیکن اس تحریر کے ذریعے ایک بار پھر عوام الناس کو باخبر کیا جا رہا ہے کہ نہ تو ان میسجز میں کوئی حقیقت ہے اور نہ ہی ان میسجز کا اے آر وائی نیٹ ورک یا جیتو پاکستان سے کوئی تعلق ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top