The news is by your side.

Advertisement

یہودی آباد کاروں کی سنگ باری سے فلسطینی خاتون شہید، شوہر زخمی

یروشلم : فلسطین پر قابض صیہونی ریاست کے شہریوں نے نابلس کے جنوبی علاقے میں آٹھ بچوں کی ماں کو سنگ باری کا نشانہ بناکر شہید کردیا۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ فلسطین کے مغربی علاقے نابلس کے جنوب میں درندہ صفت غاصب صیہونی آبادکاروں نے نہتی فلسطینی خاتون اور اس کے شوہر کو شدید سنگ باری کرکے زخمی کردیا جس کے بعد خاتون کے سر پر پتھر مار کر اسے شہید کردیا۔

فلسطینی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ گذشتہ روز علیٰ الصبح یہودی آباد کاروں نے نابلس کے جنوبی علاقے زعترہ میں چیک پوسٹ سے گزرنے والی گاڑی پر شدید پتھراؤ شروع کردیا تھا۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ انتہا پسند یہودیوں کی سنگ باری کے نتیجے میں گاڑی میں موجود 45 سالہ خاتون عایشہ محمد طلال اور ان کے شوہر شدید زخمی ہوگئے تھے۔

مقامی خبر رساں ادارے کے مطابق صیہونی ریاست کے درندہ صفت یہودی شہریوں نے بے دردی سے زخمی فلسطینی خاتون کے سر پر بھاری بھرکم پتھر مارے۔

ایمرجنسی خدمت انجام دینے والے عملے نے زخمی خاتون کو فوری طور پر اسپتال منتقل کردیا تھا تاہم وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے راستے میں ہی شہید ہوگئیں تھی۔

فلسطینی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ شہید ہونے والی 45 سالہ خاتون آٹھ بچوں کی ماں تھی، فلسطینی عوام نے خاتون کی وحشیانہ شہادت پر احتجاج کرتے ہوئے اسرائیلی جارحیت کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

یاد رہے کہ 12 اکتوبر کو اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے 6 فلسطینی نوجوان شہید جبکہ 140 سے زائد زخمی کردئیے تھے، نہتے شہریوں کی شہادت کے بعد احتجاج مزید شدت اختیار کر گیا۔

خیال رہے کہ رواں برس مارچ سے اب تک اسرائیل اور غزہ کی سرحد پر احتجاج کرنے والے مظاہرین پر صیہونی افواج کی فائرنگ سے 200 سے زائد فلسطینی شہید ہوچکے ہیں جبکہ مظاہروں کے دوران ایک اسرائیلی فوجی ہلاک ہوا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں