The news is by your side.

Advertisement

سانحہ کرائسٹ چرچ، شہدا سے اظہار یکجہتی کے لیے جھنگ میں ہزاروں افراد کا انوکھا اقدام

جھنگ: سانحہ کرائسٹ چرچ کے شہدا سے اظہار یکجہتی کے لیے جھنگ میں بیس ہزار افراد نے خود کو مسجد النور کے خاکے میں ڈھال لیا.

تفصیلات کے مطابق سانحہ کرائسٹ چرچ کو ایک ماہ مکمل ہونے پر شہدا کو جھنگ کے شہریوں نے انوکھے انداز میں خراج عقیدت پیش کیا.

ہزاروں افراد نے متاثرین سے اظہار یکجہتی کرنے کے لیے کرائسٹ چرچ کی مسجد النور کے خاکے میں‌ ڈھال کر پیغام دیا کہ مساجد امن کی جگہ ہے اور اسلام امن و سلامتی کا مذہب ہے۔

دربار سلطان باہو میں بیس ہزار افراد اکٹھے ہوئے، جنھوں نے سفید عمامہ اور سنہری ٹوپیاں پہن رکھی تھیں، ان افراد نے کمال ترتیب کا مظاہر کرتے ہوئے خو دکو نیوزی لینڈ کی النور مسجد کی شکل میں ڈھالا.

اس موقع پر فضا اللہ اکبر اور دوردو سلام سے فضا گونج اٹھی، ہزاروں افراد نے یک آواز ہو کر دنیا کو بتایا کہ اسلام پرامن مذہب ہے، اس موقع پر شہداء کی تصاویر لگائی گئیں اور ان کے لیے دعا کرائی گئی.

سانحہ کرائسٹ چرچ، نیوزی لینڈ میں‌ جدید اسلحہ رکھنے پر پابندی کا بل منظور

یاد رہے کہ 15 مارچ کو نیوزی لینڈ کے علاقے کرائسٹ چرچ میں واقع دو مساجد میں دہشت گرد حملے ہوئے تھے جس کے نتیجے میں خواتین وبچوں سمیت 50 نمازی شہید اور 20 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

اس واقعے کے نیوزی لینڈ کی حکومت اور عوام کی جانب سے شدید ردعمل آیا اور واقعے کو دہشت گردی قرار دیا تھا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں