جوانی پھر نہیں آنی 2 کا باکس آفس پر راج
The news is by your side.

Advertisement

جوانی پھر نہیں آنی 2 کا باکس آفس پر راج، مختصر وقت میں 10 کروڑ کا کاروبار

فلم نے مختصر وقت میں 10 کروڑ 72 لاکھ سے زائد کا بزنس کر کے باکس آفس پر تاریخی ریکارڈ بنالیا

کراچی: سلمان اقبال فلمز، اے آر وائی فلمز اور سکس سگما پلس کی مشترکہ کاوش سے ریلیز ہونے والی فلم جوانی پھر نہیں آنی 2 نے باکس آفس پر تہلکہ مچاتے ہوئے تمام ریکارڈ توڑ  دیے۔

تفصیلات کے مطابق عید الاضحی پر ریلیز ہونے والی فلم جوانی پھر نہیں آنی 2 کا سینیما گھروں پر دوسرے روز بھی راج جاری ہے اور شائقین کی بڑی تعداد فلم دیکھنے کے لیے سینیما گھروں کو پہنچ رہی ہے۔

سلمان اقبال فلمز، اے آر وائی فلمز اور سکس سگما پلس کی مشترکہ پیش کش سے ریلیز ہونے والی ایکشن اور رومانس سے بھرپور فلم کی بکنگ کے لیے سینما گھروں میں بے تحاشہ رش ہے اور شائقین اس بات کے خواہش مند ہیں کہ وہ اپنے پسندیدہ اداکاروں کو جلد سے جلد پردے پر دیکھ لیں۔

باکس آفس پر نیا ریکارڈ قائم

جوانی پھر نہیں آنی ٹو نے باکس آفس پر تہلکہ مچایا ہوا ہے اور  تاریخی ریکارڈ قائم کرلیا، اب تک آنے والی پاکستانی فلموں میں سے اس فلم نے کم ترین وقت میں دس کروڑ  72 لاکھ روپے کا بزنس کر کے اہم سنگ میل عبور کیا۔

مزید پڑھیں: جوانی پھر نہیں آنی 2، آتے ہی چھا گئی، باکس آفس پر نیا ریکارڈ قائم

ریلیز کے پہلے روز فلم نے دنیا بھر میں 5کروڑ 40لاکھ کا کاروبار کیا تھا جس میں سے صرف پاکستان سے 3کروڑ22 لاکھ روپے اور بیرونِ مملک میں 2 کروڑ 17 لاکھ روپے کا بزنس ریکارڈ کیا گیا تھا۔

اے آر وائی فلمز، سلمان اقبال فلمز اورسکس سگماپلس کی کامیابی سے نمائش جاری ہے، عیدالاضحی کے دوسرے روز بھی باکس آفس پر ریکارڈ توڑ بزنس ہوا۔شہریوں کی دلچسپی سے لگتا ہے سلمان اقبال فلمز،اے آر وائی فلمز اور سکس سگما پلس کی مشترکہ پیش کش نئے ریکارڈ بنانے میں کامیاب ہوگی۔

واضح رہے کہ جوانی پھر نہیں آنی 2015 میں ریلیز کی گئی تھی جس نے باکس آفس پر کامیابی کے جھنڈے گاڑے، ناظرین کی دلچسپی کو مدنظر رکھتے ہوئے اس کا سیکوئل بنانے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: فلم ’جوانی پھر نہیں آنی 2‘ پاکستان سمیت دنیا بھر میں ریلیز 

خیال رہے کہ ایکشن، ڈراما، افراتفری، مذاق مستی اور رومانس سے بھرپور فلم جوانی پھر نہیں آنی کے پہلے پارٹ کی کہانی اُن چار دوستوں کے گرد گھومتی تھی جو اپنی شادی شدہ زندگی سے پریشان تھے اور اپنی ذمہ داریوں سے نالاں ہوکر دباؤ کا شکار تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں