The news is by your side.

Advertisement

اداکار سلمان خان کی ضمانت منظور، جیل سے رہا کردیا گیا

نئی دہلی : نایاب کالے ہرن شکار کیس میں سزا یافتہ بالی ووڈ سپر اسٹار سلمان خان کی  ضمانت منظور  ہونے کے بعد جودھ پور جیل سے رہا کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق بالی ووڈ کے سلطان سلمان خان کی نایاب کالے ہرن شکار کیس میں درخواستِ ضمانت کی سماعت سیشن کورٹ جودھ پورکے جج چندرشیکھر شرما کی سربراہی آج دوپہر 2 بجے ہوئی۔

سلمان خان کو دو روز قبل کالے ہرن کے شکار کیس میں مجسٹریٹ عدالت کے جج دیو کمار کھتری نے پانچ سال قید اور دس ہزار روہے جرمانے کی  سزا سنائی تھی جبکہ جودھ پور  کے جج رویندر کمار جوشی نے اداکار کی درخواست ضمانت پر فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے سماعت ایک دن کے لیے ملتوی کردی تھی۔

عدالت نے سلمان خان کی درخواست ضمانت پر 25، 25 ہزار کے 2 مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا، فیصلے کے مطابق عدالت نے سلمان خان کو آئندہ ماہ  7مئی کو دوبارہ طلب کیا ہے ، سلمان خان کو بغیر اجازت ملک سے باہر جانے پر  بھی پابندی عائد کردی ہے، سلمان خان نے ضمانت سےپہلے2راتیں جودھ پور جیل میں گزاریں۔

سماعت سے قبل امکان ظاہر کیا جارہا تھا کہ سلمان کو آج بھی ضمانت نہیں مل سکے گی  تاہم عدالت کی جانب سے فیصلہ آنے کے بعد سپر اسٹار سلمان خان کے مداحوں نےجشن منایا۔

خیال رہے کہ دو روز قبل سلمان خان کی درخواستِ ضمانت کے حوالے سے مقدمے کی سماعت سیشن کورٹ کی دستاویزات نا مکمل ہونے کی وجہ سے نہیں ہوسکی تھی۔

بعد ازاں بھارتی ریاست راجھستان کے ہائی کورٹ نے ویب سائٹ پر جودھ پور کے ڈسٹرکٹ اور سیشن جج رویندر کمار جوشی کو تبدیلی کا نوٹس جاری کیا تھا، جس کے تحت رویندر کمار جوشی کو سروہی منتقل کرکے ان کی جگہ چندر شیکھر شرما کو جودھ پور کے سیشن کورٹ کا جج مقرر کیا گیا تھا۔


نایاب کالے ہرن کا شکار کیس، سلمان خان کو 5 سال قید کی سزا



دبنگ سلمان خان کوایک رات اور جیل میں گزارنا پڑے گی


یاد رہے  1998 میں سلمان خان سلمان خان کے خلاف نایاب کالےہرن کےشکاراوراسلحہ ایکٹ کے تحت مقدمات درج کئے گئے تھے جبکہ  دیگر افراد  اداکار سیف علی خان،اداکارہ تبو اور سونالی باندرے پربطورشریک ملزم مقدمات تھے۔

واضح رہے کہ  سلمان خان پر الزام تھا کہ انیس سو اٹھانوے کی فلم ‘ہم ساتھ ساتھ ہیں’ کی شوٹنگ کے دوران جودھ پور میں نایاب کالے ہرن کا شکار کیا تھا ، شکار کے لئے استعمال ہونے والا اسلحہ بھی غیر قانونی تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں