The news is by your side.

Advertisement

جے یوآئی نے آرٹیکل 63 اے کو غیر جمہوری قرار دے دیا

اسلام آباد : جمعیت علماء اسلام (جے یو آئی) نے آرٹیکل 63 اے غیر جمہوری قرار دے دیا اور کہا اسپیکر کو اراکین کے ووٹ مسترد کرنے کا اختیار نہیں دیا جاسکتا، سپریم کورٹ نے رائے دی تو الیکشن کمیشن فورم غیر مؤثرہوجائے گا۔

تفصیلات کے مطابق جمعیت علماء اسلام (جے یو آئی) نے صدارتی ریفرنس پر جواب سپریم کورٹ میں جمع کرا دیا، جس میں کہا ہے کہ پی ٹی آئی میں پارٹی الیکشن نہیں ہوئے، جماعت سلیکٹڈ عہدیدارچلا رہے ہیں، سلیکٹڈ عہدیدار آرٹیکل63اے کے تحت ووٹ کیلئے ہدایت نہیں کرسکتے۔

جے یو آئی کا کہنا تھا کہ اسپیکر کو اراکین کے ووٹ مسترد کرنے کا اختیار نہیں دیا جا سکتا، لازمی نہیں عدم اعتماد پر ووٹنگ سے پہلے ہی ریفرنس پررائے دی جائے۔

جواب میں کہا گیا ہے کہ کسی رکن کیخلاف نااہلی کا کیس بنا تو سپریم کورٹ تک معاملہ آنا ہی ہے، سپریم کورٹ نے پہلے رائے دی تو الیکشن کمیشن فورم غیر مؤثر ہوجائے گا۔

جے یو آئی کا کہنا تھا کہ آرٹیکل 63 اے پہلے ہی غیر جمہوری ہے، آزاد جیت کر شامل ہونیوالوں کی نشست بھی پارٹی کی پابند ہوجاتی ہے، ریفرنس سےلگتا ہے صدر،وزیراعظم ،اسپیکر ہمیشہ صادق وامین رہیں گے۔

تحریری جواب کے مطابق پارٹی کیخلاف ووٹ پر تاحیات نااہلی کمزورجمہوریت کو مزید کم ترکرے گی، عدالت پارلیمنٹ کی بالادستی ختم کرنے سے اجتناب کرے۔

خیال رہے سپریم کورٹ میں آرٹیکل63 اے کی تشریح کیلئے صدارتی ریفرنس پر سماعت آج ہوگی ، چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا پانچ رکنی لارجربنچ سماعت کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں