The news is by your side.

Advertisement

جے یو آئی ف نے آزادی مارچ میں خواتین کی شرکت پر پابندی لگا دی

اسلام آباد: جمعیت علمائے اسلام ف نے حکومت کے خلاف آزادی مارچ میں خواتین کی شرکت پر پابندی لگا دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق جے یو آئی ف سربراہ مولانا فضل الرحمان کی جانب سے آزادی مارچ میں خواتین کو شرکت کی دعوت نہیں دی گئی ہے۔

مولانا فضل الرحمان کی جانب سے مسلم لیگ ن کو بھی پیغام بھجوا دیا گیا ہے، جس میں کہا گیا کہ اگرمارچ میں ساتھ دیں توعورتوں کو ساتھ نہ لائیں۔

نمایندہ اے آر وائی نیوز کے مطابق مولانا نے مسلم لیگ ن سے یہ بھی کہا ہے کہ آزادی مارچ کے سلسلے میں جو وفود بھجوائے جائیں ان میں بھی خواتین کو شامل نہ رکھیں۔

مولانا فضل الرحمان کی جانب سے پیغام ملنے کے بعد مسلم لیگ ن نے اپنی خواتین کو بھی آگاہ کر دیا ہے کہ وہ آزادی مارچ میں شرکت نہ کریں۔

واضح رہے کہ مولانا فضل الرحمان نے 3 اکتوبر کو پریس کانفرنس میں باضابطہ اعلان کیا تھا کہ آزادی مارچ 27 اکتوبر کو ہوگا، تاریخ حتمی ہے اور کوئی تبدیلی نہیں کی جائے گی۔

تازہ ترین:  سیاسی درجہ حرارت میں اضافہ، بلاول بھٹو کی اے این پی سربراہ سے ملاقات

آزادی مارچ کے سلسلے میں جے یو آئی سربراہ نے اپوزیشن کی مرکزی جماعتوں کے سربراہان سے بھی متعدد ملاقاتیں اور مشاورت کی، اور انھیں قائل کرنے کی کوششیں کرتے رہے کہ وہ بھی پارٹی کی سطح پر مارچ کا حصہ بنیں۔

گزشتہ روز مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اسلام آباد جانا ہمارا آخری اور حتمی فیصلہ ہے، اب یہ جنگ حکومت کے خاتمے پر ہی ختم ہوگی، ہماری جنگ کا میدان پورا ملک ہوگا، ملک بھر سے انسانوں کا سیلاب آئے گا۔

ان کا کہنا تھا ہماری حکمت عملی میں جمود نہیں ہوگا، بی اور سی پلان کی طرف بھی جائیں گے، ہماری حکمت عملی میں جنون نہیں ہوگا، صورت حال سے نمٹنے کے لیے حکمت عملی تبدیل کرتے رہیں گے۔

انھوں نے یہ بھی کہا کہ آصف زرداری ہمارے مؤقف میں ہمارے ساتھ ہیں، سب سے ہمارے سیاسی رابطے ہیں، کہیں سے مایوسی نہیں ملی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں