جنید اکرم بھی Metoo# کی زد میں آگئے، پانچ خواتین کے الزامات -
The news is by your side.

Advertisement

جنید اکرم بھی Metoo# کی زد میں آگئے، پانچ خواتین کے الزامات

جنید اکرم نے تمام الزامات کو مسترد کردیا

کراچی: معروف مزاحیہ ویڈیو بلاگر بھی Metoo# کی زد میں آگئے، پانچ خواتین نے اُن پر جنسی ہراسانی کے الزامات عائد کیے جنہیںجنید اکرم نے مسترد کرتے ہوئے قانونی جنگ لڑنےکا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق معاشرے کے پیچیدہ سماجی و معاشرتی مسائل کو مزاحیہ انداز سے اجاگر کرنے والے جنید اکرم نے بہت کم عرصے میں فیس بک پر عوام میں پذیرائی حاصل کی اور وہ سوشل میڈیا کی معروف شخصیت بن کر سامنے آئے۔

دنیا بھر میں جنسی ہراسانی کے حوالے سے Metoo# مہم جاری ہے، ہالی ووڈ سے شروع ہونے والی یہ مہم بالی ووڈ تک پہنچ چکی اور اب کراچی سے تعلق رکھنے والے بلاگر بھی اس کی زد میں آگئے۔

مزاحیہ فنکار اور بلاگر پر پانچ خواتین نے الزامات عائد کیے کہ انہیں مختلف اوقات میں جنید اکرم نے بلیک میل کرتے ہوئے ہراساں کیا۔

مزید پڑھیں: سوشل میڈیا کی معروف شخصیت کا فروغِ مطالعہ مہم

ایک خاتون نے دعویٰ کیا ہے کہ ’میں اور جنید ایک دوسرے سے میسج پر کافی عرصے تک بات کرتے رہے مگر مجھے اُس نے کبھی اپنی شادی اور بیٹی سے متعلق نہیں بتایا، ہم ایک دوسرے کے بہت قریب تھے، ایک بار جنید نے زبرستی قریب آنے کی کوشش کی جس پر میں نے اُس کو تھپڑ مارا ‘۔

دوسری خاتون نے الزام عائد کیا کہ جنید اکرم نےمختلف یونیوسٹریز میں ہونے والے اپنے پروگراموں کو کامیاب بنانے کے لیے مجھ سے لوگوں کو زبردستی مدعو کروایا، انکار کرنے پر دھمکی دی کہ وہ میری ذاتی معلومات شیئر کردیں گے۔

تیسری خاتون کا کہنا ہے کہ ’جنید نے مجھے دھوکا دے کر نازیبا باتیں کیں اور جب میں نے انکار کیا تو اُس نے تمام حدیں پار کردیں اور ویڈیو چیٹ انٹرنیٹ پر شیئر کرنے کی دھمکی بھی دی جس کی وجہ سے مجھے اپنا نمبر تک تبدیل کرنا پڑا‘۔

ایک اور خاتون نے مبینہ الزام عائد کیا کہ ’جنید نے مجھ سے فیس بک پر اُس وقت رابطہ کیا جب میری عمر صرف 20 سال تھی، میں نے روکا نہیں جو میری غلطی تھی مگر بات آگے بڑھتی گئی تو بہت ساری شرمناک چیزیں سامنے آئیں‘۔

یہ بھی پڑھیں: می ٹو: ہراسمنٹ کے بارے میں پاکستانی خواتین کیا کہتی ہیں؟

 چوتھی خاتون نے 2014 میں جنید اکرم پر مبینہ الزام عائد کیا تھاکہ وہ باقاعدگی سے ویڈیوز دیکھ کر اُن پر اپنی رائے کا اظہار کرتی تھیں، پھر ایک دن جنید نے واٹس ایپ نمبر مانگا اور پھر سب سے پہلے جمعہ مبارک کا پیغام بھیجا، بعد ازاں اُس نے مجھے خود کو دکھانے کا مطالبہ بھی کیا جس پر میں نے اُسے بلاک کردیا‘۔

پانچویں خاتون نے الزام عائد کیا کہ جنید سے میری دوستی اس قدر گہری ہوگئی تھی کہ میں اُس کی محبت میں گرفتار ہوچکی تھی اور ہماری ملاقاتیں بھی ہوتی تھیں مگر اُس نے کبھی اپنی شادی کے بارے میں نہیں بتایا۔

دوسری جانب معروف بلاگر نے اپنے اوپر لگائے جانے والے الزامات کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ سوشل میڈیا پر کافی عرصے سے متحرک ہیں اور اس دوران اُن کی سیکڑوں لوگوں سے بات چیت ہوئی مگر کبھی اس طرح کی بات سامنے نہیں آئی۔

اسے بھی پڑھیں: جامعہ الازہر نے جنسی ہراسانی کو حرام قراردے دیا

اُن کا کہنا تھا کہ ’میں نے مذکورہ الزامات پر قانونی جنگ لڑنے کا فیصلہ کیا اور اس حوالے سے اپنی لیگل ٹیم سے طویل مشاورت بھی کی تاکہ ان خواتین کو نوٹس بھیجا جائے، اگر میں کہیں بھی قصور وار ہوا تو سب کے سامنے اپنی غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے معافی مانگوں گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ برس ہالی ووڈ سے جنسی ہراسانی کے خلاف شروع ہونے والی مہم میں کئی نامور شخصیات کو الزامات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ حالیہ دنوں بالی ووڈ کے معروف اداکار اور دیگر شخصیات اس کی زد میں ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں