جسٹس آ صف سعید کھوسہ کل بطورچیف جسٹس کاحلف اٹھائیں گے
The news is by your side.

Advertisement

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے چیف جسٹس آف پاکستان کا حلف اٹھا لیا

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی شہرت دانش ور جج کی ہے

اسلام آباد : جسٹس آصف سعید خان کھوسہ نے چیف جسٹس کے عہدے کا حلف اٹھا لیا، جسٹس آصف سعید کھوسہ ملک کے 26 ویں چیف جسٹس ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس آصف سعید خان کھوسہ کی بطورچیف جسٹس حلف برداری کی تقریب ایوان صدرمیں ہوئی، صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی نے جسٹس آصف سعید کھوسہ سے چیف جسٹس آف پاکستان کے عہدے کا حلف لیا۔

حلف برداری کی تقریب میں وزیراعظم عمران خان سمیت وفاقی وزرا، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی، اسپیکرقومی اسمبلی اسد قیصر، چاروں صوبوں کے گورنرز اور تینوں مسلح افواج کے سربراہان نے شرکت کی۔

حلف برداری تقریب میں سپریم کورٹ کے موجودہ، سابق ججز ، مختلف ممالک کے عدالتی نظام میں اہم عہدوں پرفائزغیرملکی اہم شخصیات نے بھی شرکت کی۔

ترک سپریم کورٹ کے صدر جسٹس نارین فردی، ناردرن سائپرس عدالت کے صدرجسٹس قاشم، نائیجریا بورنو کے جسٹس بی مارولوکر اوربھارتی سپریم کورٹ کے سابق صدراورسینئرجج بھی حلف برداری تقریب میں شریک تھے۔

جسٹس ثاقب نثار بہترین منصف ، عدالتی تاریخ کے یادگاری فیصلوں پر ایک نظر

کامن ویلتھ کی گورننگ کمیٹی اورجوڈیشل تعلیم اور کامن ویلتھ جوڈیشل ایجوکیشن انسٹیٹیوٹ کینیڈا کے صدربھی تقریب میں شرکت کریں گے۔

یاد رہے کہ صدر مملکت عارف علوی جسٹس آصف سعید کھوسہ کے بطور چیف جسٹس تقرری کی سمری پر دستخط کر چکے ہیں۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کون ہیں؟


جسٹس آصف سعید کھوسہ 21 دسمبر 1954 کو ڈیرہ غازی خان میں پیدا ہوئے ، وہ اپنی تعلیمی قابلیت اورسب سے زیادہ فیصلے تحریر کرنے کے حوالے سے منفرد مقام رکھتے ہیں۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے 1969میں میٹرک کے امتحان میں ملتان بورڈ سے پانچویں جبکہ 1971 میں انٹرمیڈیٹ میں لاہور بورڈ اور 1973 میں پنجاب یونیورسٹی سے پہلی پوزیشنز حاصل کیں اور اسی یونیورسٹی سے 1975 میں ماسٹر کی ڈگری حاصل کی، انہیں تین بار نیشنل ٹیلنٹ اسکالرشپ سے نوازا گیا۔

کیمبرج یونیورسٹی برطانیہ سے 1977 اور 1978 میں انہوں نے قانون کی دو ڈگریاں حاصل کیں، تعلیم حاصل کرنے کے بعد وہ 1979 میں ملک واپس آئے اور لاہور ہائی کورٹ سے وکالت کا آغاز کیا اور 1985 میں سپریم کورٹ کے وکیل کا درجہ ملا 1998 میں لاہور ہائی کورٹ جبکہ 2010 میں سپریم کورٹ کے جج منتخب ہوئے۔

بطور جج اپنے 18 سالہ کیرئر میں انہوں نے 50 ہزار سے زائد مقدمات کے فیصلے سنائے ہیں، نوازشریف کے خلاف پاناما کیس کا تفصیلی فیصلہ بھی انہی کے زورِ قلم کا نتیجہ تھا۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے پی سی او کے تحت حلف اٹھانے سے انکار کیا تھا جبکہ وہ کئی اہم کیسز کی سماعت کرنے والے بینچز کاحصہ رہے، انہوں نے چارکتابیں بھی تصنیف کیں۔

 چیف جسٹس آف پاکستان، جسٹس آصف سعید کھوسہ منصفِ اعلیٰ کے منصب پر347 دن  فائزرہنے کے بعد رواں سال 20 دسمبر. کو ریٹائرہوجائیں گے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں