site
stats
اہم ترین

وزیراعظم کا سیکیورٹی اداروں کو اویس شاہ کی محفوظ بازیابی کا حکم

وزیراعظم نواز شریف نے چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کے بیٹے اویس شاہ کے اغوا ہونے کا نوٹس لیتے ہوئے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو اویس شاہ کی فوری بازیابی کا حکم جاری کردیا۔

وزیراعظم نے کہا ہے کہ اویس شاہ کی محفوظ بازیابی کے لیے تمام وسائل کا استعمال کیا جائے، خفیہ اور سیکیورٹی ادارے اس ضمن میں برق رفتاری سے اقدامات کریں۔

اویس شاہ کے کسی میں سیکیورٹی اداروں کی جانب سے تاحال کوئی پیش رفت نہیں ہوسکی ان کی تلاش میں شہر بھر میں آپریشن جاری ہے۔

دریں اثنا ڈی جی رینجرز میجر جنرل بلال اکبر نے کہا ہے کہ چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ جسٹس سجاد علی شاہ کے صاحبزادے اویس شاہ کے کیس کو مختلف زاویوں سے دیکھ رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ڈی جی رینجرز نے کہا ہے کہ کراچی آپریشن تیزی سے جاری ہے اور اسے مزید مؤثر بنانے کی ضروت ہے، سجاد علی شاہ کا اغوا بھی اسی سلسلے کی کڑی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دہشت گرد تنظیمیں ملک میں عدم استحکام چاہتی ہیں اور تاکہ ملک اور بالخصوص کراچی میں قائم ہونے والے امن کو خراب کیا جائے۔

دوسری جانب بے نظیر بھٹو شہید کی پیدائش کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ شہر میں اسٹریٹ کرائم کی وارداتوں میں اضافہ ہوا جو تشیویش ناک ہے۔

مزید پڑھیں : اویس شاہ کی بازیابی کیلئے رینجرز نے انعامی رقم کااعلان کردیا

قائم علی شاہ نے مزید کہا کہ ’’جسٹس سجاد علی شاہ ہمارے بیٹوں کی طرح ہے اُس کی بازیابی کے لیے ہر قسم کی کاوشیں بروئے کار لائی جائیں گی۔

مزید پڑھیں :   چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ کے لاپتہ بیٹے کاسراغ نہ مل سکا

وزیر اعلیٰ سندھ نے اعلان کیا کہ شہر میں غیرقانونی اسلحے اور پولیس موبائل سے مماثلث رکھنے والی گاڑیوں کے خلاف جلد کریک ڈاؤن شروع کیا جائے گا۔

واضح رہے گزشتہ روڈ کلفٹن میں واقع نجی سپر اسٹور کے باہر سے جسٹس سجاد علی شاہ کو اغوا کرلیا گیا ہے جن کی تلاش میں قانون نافذ کرنے والے ادارے سرگرم ہیں، اس ضمن میں رینجرز کی جانب سے اطلاع دینے والے شخص کو 25 لاکھ روپے انعام دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top