زینب زیادتی و قتل: بچوں کے تحفظ کے لیے سوچنا ہوگا‘ شہزاد رائے -
The news is by your side.

Advertisement

زینب زیادتی و قتل: بچوں کے تحفظ کے لیے سوچنا ہوگا‘ شہزاد رائے

کراچی: معروف گلوکار اور سماجی کارکن شہزاد رائے کا کہنا ہے کہ زینب کا قتل انسانیت کی تذلیل ہے۔ ملک میں ہر پانچواں بچہ زیادتی کا شکار ہورہا ہے‘ بچوں کو گھر اور اسکول میں تربیت دے کر ایسے واقعات کی روک تھام کی جاسکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سماجی کارکن شہزاد رائے نے آج کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے قصور کے سانحے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے واقعے میں ملوث ملزم کو سخت سے سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ سانحہ انسانیت کی تذلیل ہے‘ زینب تو دنیا سے چلی گئی لیکن ہمیں بچوں کے تحفظ کے لیے سوچنا ہوگا‘ شہزاد رائے کے مطابق ہر پانچواں بچہ زیادتی کا شکا ر ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں بچوں کو صحیح اور غلط کی پہچان کرانا ہوگی‘ بچوں سےزیادتی‘ مارپیٹ کرنے والےکوسخت سزا دینی چاہئے۔ایسےواقعات سےبچنےکے لیے اسکولوں میں بچوں کوآگاہی ضروری ہے‘ بچوں سے زیادتی میں90فیصدقریبی لوگ ملوث ہوتے ہیں ۔

شہزاد رائے کے مطابق والدین اور بچوں کےدرمیان اس معاملے پر بات چیت ہونی چاہئے۔گھر اور اسکول میں بچوں کوتربیت دے کرایسےواقعات سےبچایاجاسکتاہے۔ ایسےاکثرواقعات ہیں جوسامنےنہیں آتےجبکہ اس سلسلے میں قوانین بھی موجودہیں۔

یاد رہے کہ چار روز قبل اغوا ہونے والی ننھی زینب کو درندوں نے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کیا کردیا تھا‘ سات سالہ بچی زینب کو گزشتہ روز آہوں اور سسکیوں کے ساتھ سپرد خاک کیا گیا‘ ننھی پری کی نمازجنازہ علامہ طاہرالقادری نے پڑھائی تھی۔

اغوا کے وقت زینب کے والدین عمرےکی سعادت کے لیے سعودیہ عرب میں موجود تھے اور وہ اپنی خالہ کے گھر مقیم تھی‘ گذشتہ ڈیڑھ سال کے دوران قصورمیں بچیوں کواغواکےبعد قتل کرنے کا یہ دسواں واقعہ ہے اور پولیس ایک بھی ملزم کو گرفتار کرنے میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں