The news is by your side.

Advertisement

سندھ ہائیکورٹ میں کےالیکٹرک کےخلاف درخواست، فیصلہ محفوظ

کراچی : کےالیکٹرک کےخلاف درخواست پر نیپراحکام نے عجیب منطق پیش کی ہے، نیپرا کے وکیل نے کہا ہے کہ کے الیکٹرک کیخلاف شکایت آئے تو پھر کارروائی کرینگے۔ عدالت نے کے الیکٹرک کےخلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق کےالیکٹرک کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کےخلاف شہری کرامت علی کی درخواست پرسماعت ہوئی۔ نیپرا کے موقف پرسندھ ہائیکورٹ کے جج جسٹس عرفان سعادت نے نیپرا وکیل سے سخت سوالات کرڈالے۔

انہوں نے کہا کہ نیپرا کوخبرہی نہیں کےالیکٹرک نےکراچی والوں کی زندگی عذاب بنارکھی ہے۔ سندھ ہائیکورٹ میں نیپرا وکیل کی وضاحت نے سب کو حیران کردیا، جسٹس عرفان سعادت نےنیپرا کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا نیپرا کے الیکٹرک کےخلاف خود کارروائی کااختیارنہیں رکھتی؟

نیپرا وکیل نےعدالت کو بتایا کہ ادارے کے خلاف نیپرا کے پاس کوئی شکایت آئےگی تو کارروائی کریں گے، نیپرا وکیل سے مکالمے میں جسٹس عرفان نے دریافت کیا کہ آپ اتنے لاچار ہیں کہ کارروائی کیلئے شکایت کا انتظارکررہے ہیں؟

عدالت نے ریمارکس دیئے کہ اگرنیپرا اپنی ذمہ داری پوری کررہا ہوتا تو اس درخواست کی نوبت ہی نہ آتی۔ جسٹس عرفان سعادت کےاستفسار پر کے الیکٹرک کے سربراہ ڈسٹری بیوشن نے عدالت کو یقین دلایا کہ نیپرا کی ہدایات پرعمل کرنے کوتیار ہیں، بعد ازاں عدالت نے کے الیکٹرک کےخلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں