The news is by your side.

Advertisement

کےالیکٹرک کے 88فیڈر اور 40پی ایم ٹیز ٹرپ کرگئیں

کراچی: شہرقائد میں موسلادھار بارش نے بجلی کا نظام بھی درہم برہم کردیا، کےالیکٹرک کے 88فیڈر اور 40پی ایم ٹیز ٹرپ کرگئیں، شہری شدید پریشانی کا شکار ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں فیڈز اور پی ایم ٹیز ٹرپ ہونے سے 18گھنٹے سے بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی، مختلف علاقوں میں 86کیبل فالٹس اور منسلک علاقوں میں بجلی بند ہے، بیشتر علاقوں میں تارٹوٹنے اور سب اسٹیشن بند ہونے سے بھی بجلی کی فراہمی معطل ہے، شہر کے 25فیصد حصے سے بجلی غائب ہوگئی۔

شہر کے جن علاقوں میں بدترین لوشیڈنگ ہورہی ہے ان میں نارتھ کراچی، گلستان جوہربلاک7، ناظم آباد، شادمان، گلبرگ، ناگن، ایف بی ایریا، بفرزون، ملیر، شاہ فیصل کالونی، کیماڑی، بلدیہ، شیرشاہ، نیوکراچی اور اخترکالونی میں بجلی معطل ہے۔

اسی طرح پاپوش، پی ای سی ایچ ایس، ڈی ایچ اے، کورنگی، کلفٹن، بلوچ کالونی، اورنگی، کیماڑی اور لیاقت آباد کے مختلف حصوں میں بھی بجلی غائب ہے۔

کراچی میں مون سون بارشوں کا 36 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا

خیال رہے کہ کراچی میں اگست کے مہینے میں مون سون بارشوں کا 36 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا، اس سے قبل فیصل بیس میں سب سے زیادہ بارش 1984 میں 298.4 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی تھی۔

محکمہ موسمیات کے مطابق رواں ماہ اگست میں اب تک فیصل بیس میں 345 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ جاری کردہ اعدادو شمار کے مطابق مسرور بیس میں سب سے زیادہ بارش 2007 میں 272 ملی میٹر ریکارڈ ہوئی تھی جبکہ رواں ماہ اب تک مسرور بیس میں 228.5 ملی میٹر ریکارڈ ریکارڈ ہوئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں