The news is by your side.

Advertisement

قاتل الیکٹرک کی اجارہ داری ختم کر کے رہیں گے: اراکین اسمبلی

کراچی: پاکستان تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی کا کے الیکٹرک ہیڈ آفس کے باہر دھرنا جاری ہے، اراکین نے عزم کا اظہار کیا ہے کہ کراچی کی تقسیم کار کمپنی کی اجارہ داری ختم کر کے رہیں گے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق کراچی میں کے الیکٹرک ہیڈ آفس کے باہر دھرنے میں اراکین سندھ اسمبلی راجہ اظہر اور ریاض حیدر موجود ہیں، انھوں نے اے آر وائی نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کے الیکٹرک کی اجارہ داری اب ختم کریں گے، اس نے کراچی کے شہریوں کو ذہنی مریض بنا دیا ہے، قاتل الیکٹرک کی من مانیاں مزید نہیں چلیں گی۔

ادھر کراچی سمیت اندرون سندھ مختلف شہروں میں لوڈ شیڈنگ بدستور جاری ہے، گڈاپ کاٹھور، گلشن معمار، شادمان ٹاؤن، احسن آباد، اورنگی، گلستان جوہر، شاہ فیصل کالونی، سرجانی ٹاؤن، خدا کی بستی، ملیر سعود آباد، نیو کراچی، لسبیلہ، پٹیل پاڑہ، مارٹن کوارٹرز، جمشید روڈ، عزیر آباد، ایف بی ایریا پر سات گھنٹوں سے بجلی بند ہے۔

ملک کے بڑے شہر پر بدستور اندھیروں کا راج، کے الیکٹرک کے آگے سب بے بس

نصرت بھٹو کالونی میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ پر عوام نے احتجاج کیا، لسبیلہ سڑک پر بھی احتجاج کے باعث سڑک ٹریفک کے لیے بند کر دی گئی، ڈی ایچ اے فیز 2 اور فیز 4 میں دوپہر 4 بجے سے بجلی بند ہے۔ ملیر کے مختلف علاقوں میں 14 گھنٹے سے بجلی کی لوڈ شیڈنگ جاری ہے، ریلوے سٹی ہمپ یارڈ کالونی میں شام 5 بجے سے بجلی بند ہے۔

حیدر آباد شہر کے مختلف علاقوں میں بھی 6 گھنٹوں سے بجلی کی فراہمی معطل ہے، جس کی وجہ سے شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔

ادھر نیپرا اتھارٹی نے کے الیکٹرک کے خلاف شکایات کا سخت نوٹس لے لیا ہے، نیپرا نے اوور لوڈ شیڈنگ کے حوالے سے جمعے کو عوامی سماعت کا فیصلہ کیا ہے، نیپرا نے کے الیکٹرک کی اضافی لوڈ شیڈنگ اور اوور بلنگ کے خلاف اشتہار بھی جاری کر دیا، 10 جولائی کو ویڈیو لنک کے ذریعے شہریوں کی شکایات سنی جائیں گی۔

کے الیکٹرک ترجمان نے بیان جاری کیا ہے کہ ڈیفنس، کورنگی کے متاثرہ مقامات پر بحالی کا کام جاری ہے، گلشن، بلدیہ، سرجانی کے کچھ مقامات پر بجلی جلد بحال کر دی جائے گی، درخت گرنے یا پانی کھڑا ہونے کے باعث بحالی میں مشکلات ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں