The news is by your side.

Advertisement

افغان وزارت دفاع کی عمارت میں‌ دھماکا، 10 افراد ہلاک، درجنوں زخمی

کابل : افغانستان کی وزارت دفاع کے لاجسٹک سینٹر کے اندر زور دھماکے کے نتیجے میں 10 افراد ہلاک جبکہ بچوں سمیت 68 افراد زخمی ہوگئے، ہلاکتوں میں مزید اضافے کا خدشہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق افغانستان کے داراالحکومت کابل کے سفارتی علاقے کے اندر امریکی سفارت خانے کے قریب ہوا جس کی زد میں آکر درجنوں افراد زخمی ہوگئے جنہیں اسپتال منتقل کیا جارہا ہے۔

میڈیا ذرائع کا کہنا ہے کہ دھماکا اتنا شدید تھا کہ پورے کابل کے اکثر علاقوں میں عمارتوں اور گھروں کے شیشے ٹوٹ گئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ دھماکا پیر کی صبح اس وقت ہوا جب سفارت علاقے کی گلیاں عوام سے بھری ہوئی تھیں۔

کابل پولیس ترجمان محمد کریم کا کہنا ہے کہ وزارت دفاع کی عمارت کے اندر لاجسٹک سینٹر میں کار میں موجود بم زور دار دھماکے سے پھٹا، جس کےبعد مسلح دہشت گرد عمارت میں داخل ہوگئے۔

وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت رحیمی کا کہنا ہے کہ طالبان دہشت گردوں کے عمارت میں داخل ہونے کے بعد افغان فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان تاحال جھڑپیں جاری ہیں۔

تحریک طالبان افغانستان کے ترجمان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتےہوئے بیان جاری کیا ہے کہ یہ حملہ ہمارے عسکری ونگ کی جانب سے وزارت دفاع کےلاجسٹک اور انجینئرنگ سینٹر پر کیا گیا ہے۔

ترجمان طالبان کا کہنا ہے کہ حملے کے نتیجے میں شہریوں کی بڑی تعداد میں ہلاکت کی اطلاعات موصول ہوئیں ہیں، مذکورہ حملے میں ملٹری فورسز ہمارا نشانہ تھیں عام شہری نہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ دھماکے کى جگہ سے چاروں طرف ايک کلوميٹر علاقے کو سيل کرکے آمدورفت مکمل سيل کردى ہے ،تاحال فورسز اور طالبان ميں لڑائی جارى ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سوال يہ ہے کہ 28 سيکورٹى پوانٹس سے گذر کر يہ حملہ آور وزارت دفاع کی عمارت تک کیسے پہنچے؟

اقوام متحدہ، این جی اوز اور افغان حکومت نے عام شہریوں کی ہلاکتوں پر طالبان کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے واقعے کی مذمت کی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں