The news is by your side.

’اس لڑکی کو اپنے ہاتھ سے جلایا تھا‘

اے آر وائی ڈیجیٹل کے ڈرامہ سیریل ’کیسی تیری خود غرضی‘ میں مہک کو اپنے ہاتھوں سے جلانے والا شیرو اسے زندہ دیکھ کر حیران رہ گیا۔

ڈرامہ سیریل ’کیسی تیری خود غرضی‘ میں دانش تیمور (شمشیر)، درفشاں سلیم (مہک)، لائبہ خان (ندا)، نعمان اعجاز (بابا صاحب، نواب دلاور)، شہود علوی (اکرم مہک کے والد)، لیلیٰ واسطی (مہک کی والدہ)، عتیقہ اوڈھو، حماد شعیب (احسن) ودیگر مرکزی کردار نبھا رہے ہیں۔

گزشتہ قسط میں دکھایا گیا کہ ’مہک کو گاڑی میں پیٹرول چھڑک کر آگ لگانے والا شیرو اسے زندہ دیکھ کر حیران ہوگیا۔

شیرو کہتے ہیں کہ ’اگر لڑکی کل مالک (بابا صاحب) کے گھر پہنچی تو وہ مجھے زندہ نہیں چھوڑیں گے۔‘ وہ یہ کہتے ہوئے وہاں سے بھاگ جاتا ہے۔

دوسری جانب بابا صاحب شیرو کے غائب ہونے پر اس کو تلاش کرنے کو کہہ رہے ہیں کیونکہ اس نے مہک کو مارنے کا کام پورا نہیں کیا۔

ڈرامے کی 14ویں قسط میں دکھایا گیا کہ ’شمشیر مہک سے نکاح کرنے کے بعد انہیں لے کر گھر پہنچ جاتے ہیں۔‘

شمشیر گھر پہنچ کر والدہ کے گلے لگتے ہیں اور والد اور والدہ کو بتاتے ہیں کہ ہم نے نکاح کرلیا ہے۔

دوسری جانب بابا صاحب کہتے ہیں کہ ’میں یہ ذلت ہر گز برداشت نہیں کروں گا ایسا سبق سکھاؤں گا کہ ان کی سات پشتیں یاد رکھیں گی۔‘

مہک کے والد کہتے ہیں کہ ’وہ لوگ ہماری بیٹی کو کبھی قبول نہیں کریں گے۔‘

ادھر مہک شمشیر سے کہتی ہیں کہ میں آپ کی بیوی کبھی نہیں بن سکتی آپ کی قید میں صرف باندھی ہوں اور وہی رہوں گی۔

بابا صاحب شمشیر سے کہتے ہیں کہ ’تم نے اپنی ضد پوری کرنی تھی کرلی مزید دو چار دن اسے یہاں رکھنا چاہو تو رکھ لو اس کے بعد اس کے جو پیسے بنتے ہیں دے کر فارغ کرو۔‘ یہ سن کر شمشیر مسکرا دیتے ہیں۔‘

کیا شمشیر مہک کو چھوڑ دیں گے؟ کیا بابا صاحب مہک کو قبول کرلیں گے؟ یہ سب جاننے کے لیے ڈرامہ سیریل ’کیسی تیری خود غرضی‘ کی اگلی قسط ہر بدھ کی رات 8 بجے دیکھنا نہ بھولیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں