The news is by your side.

Advertisement

بالی وڈ کی سپراسٹار کاجول کو گائے کا گوشت کھانا مہنگا پڑگیا

ممبئی : بالی وڈ کی سپر اسٹار کاجول کو گائے کا گوشت کھانا مہنگا پڑگیا اور ہندوانتہاپسندوں کی شدید تنقید کے بعد کاجول نے بیان بدلتے ہوئے کہا کہ میں نے گائے کے نہیں بھینس کے گوشت سے بنی ڈش کھائی۔

بالی وڈ کی میگا ہیروئین کاجول بھی مودی سرکار میں جاری انتہاپسندی کی لہر سے بچ نہ سکیں، کاجول نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام پر دوستوں کے ساتھ کھانا کھاتے ہوئے ایک تصاویر اور ویڈیو شیئر کی، ویڈیو میں انکا دوست گوشت سے بنی ڈش کے حوالے سے بتا رہا ہے، جس کے بعد سوشل میڈیا پر طوفان آگیا، ہندوانتہا پسندوں نے کاجول کو آڑے ہاتھوں لیا۔

It’s a beautiful Sunday life ! fun and . @foodstories_1

A post shared by Kajol Devgan (@kajol) on

معاملہ کی سنگینی پر کاجول خوفزدہ ہوگئیں اور بیان بدلنے پر مجبور ہوگئیں، کاجول نے ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ میں نے گائے کے نہیں بھینس کے گوشت سے بنی ڈش کھائی، جس کے حوالے سے غلط فہمی پیدا ہوئی اس لیے وضاحت کرنا ضروری سمجھتی ہوں ۔

کاجول نے انتہا پسندوں کے خوف سے ویڈیو بھی انسٹا گرام سے ہٹا دی۔


مزید پڑھیں: بھارت میں گائےچوری کاالزام‘2مسلمان نوجوان ہلاک


یاد رہے کہ آسام میں بھی اتوار کو دو مسلمان لڑکوں کو گائے چرانے کے الزام میں ہندوانتہا پسندوں کے ہجوم نے لاٹھیوں سے تشدد کرکے جاں بحق کردیا تھا۔

واضح رہے کہ ہندو گائے کو اپنے لیے مذہبی طور پر متبرک خیال کرتے ہیں اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے برسراقتدار آنے کے بعد سے انتہا پسند ہندوؤں نے مسلمانوں کے خلاف گائے ذبح کرنے یا اس کا گوشت کھانے کے شُبے میں تشدد کی کارروائیاں تیز کررکھی ہیں اور اب تک متعدد مسلمان جان کی بازی ہار چکے ہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں