کلبھوشن کو کسی صورت بھارت کے حوالے نہیں کیا جائے گا، دفتر خارجہ
The news is by your side.

Advertisement

کلبھوشن کو کسی صورت بھارت کے حوالے نہیں کیا جائے گا، دفتر خارجہ

اسلام آباد: دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر فیصل نے کہا ہے کہ پاکستان عالمی عدالتِ انصاف میں کلبھوشن کیس سے متعلق جواب جولائی میں جمع کرائے گا، کلبھوشن کو کسی صورت بھارت کے حوالے نہیں کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ بھارتی جاسوس کا کیس عالمی عدالت انصاف میں زیر سماعت ہے جس کا جواب جمع کرانے کے لیے پاکستان کے پاس جولائی تک کا وقت ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ جولائی میں پاکستانی کی جانب سے مقدمے کا جواب دو ماہ بعد داخل کرایا جائے گا، ایسا ممکن ہی نہیں کہ کلبھوشن کو کسی بھی صورت بھارت کے حوالے کیا جائے۔

مزید پڑھیں: کشن گنگا ڈیم کا معاملہ، پاکستان کا ورلڈ بینک سے رجوع کرنے کا فیصلہ

ڈاکٹر فیصل کا کہنا تھا کہ بھارت نے کشن گنگا ڈیم کی تعمیر کر کے سندھ طاس معاہدے کی سراسر خلاف ورزی کی ، پاکستان نہیں چاہتا کہ دونوں ممالک کے درمیان آبی تنازعات کسی خطرناک نہچ تک پہنچ جائیں۔

دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ہم نے عالمی بینک میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ  بھارت کی جانب سے تعمیر کیا جانے والا کشن گنگا ڈیم سندھ طاس معاہدے کی سراسر خلاف ورزی ہے اگر مودی حکومت نے اس طرح کے اقدامات سے گریز نہ کیاتو معاملات خطرناک موڑ پر پہنچ جائیں گے۔

واضح رہے کہ کشن گنگا ڈیم کی تعمیر بھارت نے 2009 میں شروع کی تھی جس کا معاملہ پاکستان نے متعدد بار عالمی بینک کے سامنے اٹھایا تھا مگر بھارتی وزیر اعظم نے حالیہ دورہ مقبوضہ کشمیر کے موقع پر 330 میگاواٹ کے کشن گنگا ڈیم کا افتتاح کیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں