site
stats
اہم ترین

این اے 120: بیگم کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی منظور

لاہور: این اے 120 سے ضمنی انتخاب لڑنے کے لیے کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے گئے اور تمام اعتراضات کو مسترد کردیا گیا ہے، پی پی اور عوامی تحریک نے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرنے کا اعلان کردیا۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندہ لاہور عابد خان کے مطابق این اے 120 سے ضمنی انتخاب لڑنے کی خواہش مند ن لیگ کی رہنما بیگم کلثوم نواز کے کاغذات پر دائر تمام اعتراضات مسترد کرکے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے ہیں۔

متعلقہ ریٹرننگ آفیسر (آر او) کے مطابق دو افراد نے بیگم کلثوم نواز کے کاغذات پر اعتراض کیا تھا تاہم دلائل سننے کے بعد تمام اعتراضات مسترد کردیے گئے ہیں۔

الیکشن کمیشن کے باہر بات کرتے ہوئے ن لیگ کے رہنما آصف کرمانی نے کہا کہ کلثوم نواز پر تقریباً نو اعتراضات تھے جو صرف اعتراض تھے ان کا کوئی ثبوت نہیں تھا، آر او نے انہیں دل کھول کر موقع دیا، وہ دونوں افراد ایک ڈیڑھ گھنٹے تک اعتراض کرتے رہے، مجھے وہ اعتراضات سن کر ہنسی آگئی کیوں کہ یہ وہ اعتراض تھے جنہیں گزشتہ کئی سال سے عمران خان اور ان کا ٹولہ لگاتا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کے پاس بھی نواز شریف کے خلاف کرپشن کے کوئی ثبوت نہیں تھے محض اخباری تراشے اور خواہشات تھیں۔

خیال رہے کہ یہ انتخاب 17 ستمبر کو ہوں گے اور یہ نشست سابق وزیر اعظم نواز شریف کو عدالت کی جانب سے نااہل قرار دیے جانے کے بعد خالی ہوئی ہے۔

پی پی اور عوامی تحریک کا اپیلیٹ ٹریبونل جانے کا اعلان

دریں اثنا پیپلز پارٹی اور عوامی تحریک نے کلثوم نواز کے کاغذات منظور ہونے کے خلاف اپیلیٹ ٹریبونل میں اپیل دائر کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندہ عابد خان کے مطابق پیپلز پارٹی کے رہنما فیصل میر کا موقف ہے کہ اعتراضات ٹھوس تھے اور مسترد نہیں کیے جاسکتے تھے اس لیے اپیلیٹ ٹریبونل میں درخواست دیں گے، ٹریبونل سے انصاف کی امید ہے۔

اسی ضمن میں عوامی تحریک نے بھی کہا ہے کہ اپیلٹ ٹریبونل میں کاغذات نامزدگی کو چیلنج کریں گے

اعتراض کس نے کیا؟

قبل ازیں اسی حلقے سے انتخاب لڑنے والے تحریک انصاف کی امیدوار ڈاکٹر یاسمین راشد نے کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی ریٹرننگ افسر کے روبرو چیلنج  کیے تھے۔

تحریک انصاف کی امیدوار ڈاکٹر یاسمین راشد کی جانب سے دائر کی گئی پٹیشن میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی میں ان کے خاوند نوازشریف کی جائیدادوں کی تفصیلات جے آئی ٹی سے مطابقت نہیں رکھتیں۔

یاسمین راشد کے مطابق  نوازشریف کے اثاثوں اور اقامہ سے متعلق جو کاغذات کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی کے ساتھ منسلک ہیں انھیں سپریم کورٹ جعلی قرار دے چکی ہے، بیگم کلثوم نواز نے کاغذات نامزدگی کے ہمراہ مری کی رہائش میں موجود فرنیچر اور دیگر اشیاء کی تفصیلات کے علاوہ کیپٹل زیڈ سے ہونے والی والی آمدن اورٹیکس ادائیگی کی تفصیلات کاغذات نامزدگی میں درج نہیں کیں۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ بیگم کلثوم نواز سندھ میں غداری کے مقدمے میں مفرور بھی ہیں، بیگم کلثوم نواز کے ایماء پر ضلعی انتظامیہ این اے 120 میں ترقیاتی کام جاری رکھے ہوئے ہے جو کہ انتخابی دھاندلی ہے لہذا بیگم کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی مسترد کیے جائیں۔


یہ پڑھیں: این اے 120 ضمنی انتخاب فوج کی نگرانی میں کرانے کے لیے درخواست دائر


یاد رہے کہ کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی کے خلاف تحریک انصاف، پیپلز پارٹی، عوامی تحریک اور ایک شہری نے بھی اعتراضات جمع کروائے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top