’ ہراساں‌ کرنے کے معیار ہیں، ہربات می ٹو نہیں ‘ -
The news is by your side.

Advertisement

’ ہراساں‌ کرنے کے معیار ہیں، ہربات می ٹو نہیں ‘

ممبئی: بالی ووڈ اداکارہ کنگنا رناوت نے انکشاف کیا ہے کہ انہیں فلموں کی شوٹنگ کے دوران متعدد بار ہراساں کیا گیا جو اُن کے لیے بہت مشکل تھا۔

بھارتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اداکارہ کا کہنا تھا کہ ’ یہ ضروری نہیں کہ ہر واقعے کو ’می ٹو‘ مہم سے جوڑ دیا جائے کیونکہ ہراساں کرنے کے  الگ الگ معیار ہیں، مجھے بھی متعدد اداکاروں نے فلم کی شوٹنگ کے دوران ہراساں کیا‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ میرے ساتھ جس طرح کے واقعات رونما ہوئے انہیں میں جنسی ہراسانی کا نام نہیں دے سکتی البتہ اتنا ضرور ہے کہ وہ وقت میرے لیے بہت زیادہ تکلیف دہ اور ذلت آمیز تھا‘۔

مزید پڑھیں: اگر کسی نے ہراساں کیا تو سب تباہ کردوں گی، کنگنا رناوت کا انتہا پسندوں کی دھمکیوں پر ردعمل

اداکارہ کا کہنا تھا کہ ‘اب تک کے کیریئر میں کئی لوگوں کے زہریلے رویے برداشت کیے، یہ بھی ہراساں کرنے کی ایک قسم ہے جس کا شمار جنسی ہراسانی میں ہرگز نہیں کیا جاسکتا‘۔

کنگنا کا کہنا تھا کہ مجھے آج تک کسی نے جنسی ہراساں نہیں کیا، کچھ لوگ ایسے ہوتے ہیں جن کو انا کا مسئلہ ہوتا ہے وہ سیٹ پر ایسا رویہ اپناتے ہیں جو ناقابلِ برداشت تو ہوتا ہے مگر اُسے ’می ٹو‘ کا نام نہیں دیا جاسکتا۔

اداکارہ کا کہنا تھا کہ انڈسٹری میں کام کرنے والے کچھ اداکار غصے کے بہت تیز ہیں جن کا ساتھی اداکاراؤں کے ساتھ رویہ بہتر ہونا چاہیے، اگر آپ کے مزاج میں نرمی نہیں تو زندگی گزارنے کا کوئی فائدہ نہیں ہے‘۔

یہ بھی پڑھیں: راج کمار ہیرانی پر ہراساں کرنے کے الزامات، نامور شخصیات نے خاموشی توڑ دی

یاد رہے کہ چند روز قبل کنگنا رناوت نے انتہاء پسندوں کی طرف سے ہراساں کیے جانے کے بعد دو ٹوک اعلان کیا تھا کہ ’اگر مجھے یا ٹیم کی کاسٹ کو ہراساں کیا گیا تو سب کچھ تباہ کردوں گی‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں