متحدہ کارکنان کا ماورائے عدالت قتل انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے، کنور نوید جمیل -
The news is by your side.

Advertisement

متحدہ کارکنان کا ماورائے عدالت قتل انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے، کنور نوید جمیل

کراچی : شہر قائد میں جاری حالیہ آپریشن میں رینجرز اہلکاروں کی جانب سے بڑی تعداد میں ماورائے عدالت قتل عام بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

ان خیالات کا اظہار متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنونیر کنور نوید جمیل نے رینجرز کے ہاتھوں ماورائے عدالت قتل کئے گئے ایم کیوایم کے کارکن ریاض الحق شہید کی تدفین کے بعد ایم کیو ایم لانڈھی ٹاوٴن آفس میں اراکین رابطہ کمیٹی کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہو ں نے کہا کہ محض گزشتہ تین سالوں کے دوران ایم کیوا یم کے 61 کارکنان کو ماورائے عدالت قتل کیا جاچکا ہے لیکن افسوس کہ آج تک ان میں سے کسی ایک کے قاتل کو بھی گرفتار نہیں کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم لانڈھی ٹاوٴن کے یوسی 81 کے 41 سالہ کارکن ریاض الحق ولد عبدالحق کو رینجرز اہلکار 19 مئی 2016ء کی رات ان کے گھر سے گرفتار کرکے لے گئے تھے جس کے بعد ریاض الحق کے اہل خانہ نے ان کی بحفاظت بازیابی کیلئے سندھ ہائی کورٹ میں پٹیشن بھی دائر کردی تھی۔

انہوں نے کہا کہ رینجرز نے ریاض الحق کی گرفتاری کسی بھی تھانے میں ظاہر نہیں کی اور بالآخر 30 جون 2016 ء کو ریاض الحق کی تشدد زدہ لاش سرجانی ٹاوٴن کی حدود سے ملی۔

انہوں نے کہا کہ اس قسم کے واقعات کے باعث کراچی کے شہریوں میں شدید بے چینی جنم لے رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاض الحق کو ان کے گھر اور محلے والوں کے سامنے رینجرز اہلکار گرفتار کرکے لے کر گئے تھے جس کے بعد ان کی مسخ شدہ لاش سرجانی ٹاؤن سے ملی۔

انہوں نے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے کراچی کے شہریوں کو محض اس بنیاد پر قتل کررہے ہیں کہ ان کی سیاسی و نظریاتی وابستگی ایم کیو ایم کے ساتھ ہے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں