کراچی کے نوجوان مصوروں کا امجد صابری کو خراج عقیدت -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی کے نوجوان مصوروں کا امجد صابری کو خراج عقیدت

کراچی: امجد صابری کی شہادت کے بعد سے ان سے عقیدت رکھنے والے اپنے اپنے انداز سے خراج تحسین پیش کر رہے ہیں، کراچی کے نوجوان مصوروں نے دیواروں پر امجد صابری کے تصاویر پینٹ کر دیں۔

امجد صابری کی شہادت سے موسیقی ایک باب تو ہمیشہ کے لیے بند ہو گیا لیکن ساتھ ہی عقیدت و محبت کے کئی در کھول گیا،امجد صابری اپنے انوکھے انداز گائیکی اور منفرد شخصیت کے باعث دنیا بھر میں ہمیشہ یاد رکھیں جائیں گے،حقیقیت یہ ہے کہ یہ ایک ایسا سانحہ ہے جس پر اب تک یقین کرنے کو دل نہیں کرتا۔


آہ … امجد صابری قاتلانہ حملے میں جاں بحق


امجد صابری کی شہادت کو 5 روز گذر گئے ہیں تا ہم ان کے چاہنے ہر روز ایک نئے انداز سے اُن کی یاد کو تازہ کر رہے ہیں،کہیں قرآن خوانی کی جا رہی ہیں کہیں نعت کی محافل جاری ہیں کسی جگہ امجد صابری کے مخصوص انداز میں پڑھی ھئی قوالیاں سنی جا رہی ہیں تو شمع فروازاں کی تقریب میں امجد صابری کی یاد میں شمعیں جلائی جا رہی ہیں اور کہیں شاعرانہ انداز میں خراج عقیدت پیش کیا جا رہا ہے۔

کراچی کے ممتاز شاعر حیدر جلیسی کا قطعہ

متحدہ قومی موومنٹ  کے رہنما حیدر عباس رضوی کا خراج تحسین

amjad-post-1-

 

 

ممتاز شاعر انور شعور کے دلی جذبات

نوجوان مصور کا امجد صابری کو خراج تحسین

ظالموں نے امجد صابری کو قتل کر کے اسے صفحہ ہستی سے مٹانا چاہا لیکن کراچی کے نوجوان مصوروں نے امجد صابری کو کراچی کے در و دیوار پرسجا دیا۔
karachi 6

کراچی یونیورسٹی کے طالب علموں کی یہ جاذب نظر تخلیق شاہراہ سے گذرتے ہر شخص کو امجد صابری کی یاد دلا جاتی ہے۔

sabri 2

سید محمد رضا اور عاقب فیض مصوری کراچی کے مصوری اور آرٹ کے معروف درس گاہ میں زیر تعلیم ہیں،انہیوں نے امجد صابری کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے اہنی تخلیقی صلاحیتوں کو چُنا اور کورنگی کی دیوار پر تصاویر پینٹ کر دی۔

karachi 5

کراچی کے نوجوانوں کی جانب سے چلچلاتی دھوپ اور چبھتی دھوپ میں گھنٹوں کی محنت امجد صابری شہید کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے صَرف کیے،ان کی عقیدت سے امجد صابری کی نوجونوں میں مقبولیت کااندازہ لگا یا جا سکتا ہے۔

karachi 3

نوجوان مصوروں نے امجد صابری کے پورٹریٹ بنانے کے لیے شوخ رنگوں کا استعمال کیا،جو امجد صابری کی حقیقی شخصیت کا آئینہ دار بھی ہے،وہ ایک خوش مزاج و خوش لباس شخص تھے اور آخری وقت میں بھی سرخ رنگ زیب تن کیے ہوئے تھے۔

karachi 4

 

دہشت گرد امجد صابری کی آواز کو ختم کرنے میں تو کامیاب ہوگئے لیکن رہتی دنیا کے لیے حب رسول و آل ِ رسول کی مدح میں پڑھی جانے والی قوالیوں کو امر کر گئے۔

امجد صابری کی شہادت کے بعد یہ عمومی مشاہدہ کیا گیا ہے کہ جو لوگ کبھی قوالی نہیں سنتے تھے وہ بھی امجد صابری کا کلام سنتے نظر آرہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں