The news is by your side.

Advertisement

کراچی، چھت سے گرا یا پولیس نے دھکا دیا؟ نوجوان کی موت معمہ بن گئی

کراچی: شہر قائد کے علاقے لانڈھی میں جاں بحق ہونے والے نوجوان بلال کی موت معمہ بن گئی، اہل خانہ اور پولیس ایک دوسرے پر الزام تراشی کررہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے لانڈھی کے رہائشی 19 سالہ بلال کو گزشتہ روز پولیس اور اہل خانہ جناح اسپتال لے کر پہنچے جہاں اُس نے زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ دیا۔

بلال کے بھائی تنویر خان ولد بہادر خان نے دعویٰ کیا تھا کہ رات گئے اُن کے گھر پر شاہ لطیف تھانے کے اہلکار پہنچے اور انہوں نے بتایا کہ بلال کے خلاف رشتے داروں نے شکایت درج کرائی۔

مقتول کے بھائی کا کہنا تھا کہ بلال نے جب تھانے ساتھ جانے سے انکار کیا تو اہلکاروں نے اُس پر تشدد کیا اور اُسے چوتھی منزل سے نیچے پھینک دیا جس کے باعث وہ شدید زخمی ہوا۔

مزید پڑھیں: لاہور پولیس کا نو سالہ بچے پر بہیمانہ تشدد، ذمہ دار افسر کیخلاف مقدمہ درج

اہل خانہ اور پولیس اہلکار بلال کو لے کر اسپتال پہنچے جہاں اُسے انتہائی نگہداشت وارڈ میں رکھا گیا البتہ وہ زخموں کی تاب نہ ہوئے گزشتہ رات ہی دم توڑ گیا تھا۔

دوسری جانب پولیس حکام نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ جب مقتول کے گھر چھاپہ مارا گیا تو اُس نے چھت سے نیچے چھلانگ لگا کر فرار ہونے کی کوشش کی مگر وہ ناکام رہا اور چوتھی منزل سے نیچے گر گیا۔

اہل خانہ نے الزام عائد کیا ہے کہ 19 سالہ بلال کو پولیس اہلکاروں نے تشدد کے بعد چھت سے دھکا دیا۔ نوجوان کے قتل کی گتھیاں کئی گھنٹے گزر جانے کے باوجود بھی سلجھ نہ سکیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں