The news is by your side.

کراچی چیمبر آف کامرس نے بجٹ کو مناسب قرار دیدیا

کراچی چیمبر آف کامرس نے وفاقی بجٹ کو مناسب بجٹ قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ روس یوکرین جنگ طول اختیار کرنے سے جلد ہی ایک اور بجٹ پیش ہوسکتا ہے بجٹ جتنا مشکل سمجھا جارہا تھا اتنا مشکل نہیں ہے۔

کراچی چیمبر میں پوسٹ بجٹ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بزنس مین گروپ کے چئیرمین زبیرموتی والا نے کہا کہ تجارتی خسارہ بلند ترین سطح پر ہے جب تک عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی فی بیرل قیمت 70سے 75ڈالر کی سطح پر نہیں آئیں گی اس وقت تک ملک میں غیریقینی صورتحال برقرار رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ سولر سسٹم پر ڈیوٹی ختم کرنے کی سفارش مان لینے پر حکومت کے شکر گزار ہیں۔کراچی چیمبر کے صدر محمد ادریس نے کہا کہ مقامی گاڑیوں کے تحفظ دینے کے لئے درآمدی گاڑیوں پر ٹیکس بڑھایا گیا لیکن الیکٹرک کار کے مستقبل کو بچانے کے لیے اسے تحفظ دینے کی ضرورت ہے، بجٹ میں چھوٹے تاجروں کے لیے فکسڈ ٹیکس نظام متعارف کرانا اچھا اقدام ہے ایف بی آر کے ٹیکس وصولی بڑھائی ہے، 350 اشیا پر کسٹم ڈیوٹی کم ہوگی، لگژری گاڑیوں پر 100فیصد ٹیکس بڑھا دیا ہے۔

9.5 کھرب روپے کا بجٹ پیش، خسارہ 500 ارب سے زائد

محمد ادریس نے کہا کہ تعلیم اور آئی ٹی کے شعبے کے لیے فنڈز بڑاھنے کی ضرورت ہےانہوں نے کہا کہ بجلی کے بل میں 100 روپے لگ رہے ہیں، پراپرٹی کے پر 5 فیصد رینٹ ایک فیصد ٹیکس عائد کیا گیا ہے بجٹ میں بینکوں کے منافع پر 40 سے 45فیصد سپر ٹیکس اچھا فیصلہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بجٹ اسی لیے زیادہ سخت نظر نہیں آرہا ہے کیونکہ قبل از بجٹ ہی بجلی، گیس، پیٹرول، ڈیزل شرح سود بڑھادی گئی ہے اور ڈالر کی قدر میں بھی اضافہ کردیا گیا تھا۔ انہوں تنازعات کےتصفیوں کے لئے اے ڈی آر سی میں 2 ٹیکس دھندہ نمائندوں کی شمولیت مستحسن اقدام ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں