The news is by your side.

Advertisement

کراچی: کمسن ملازمہ پر بدترین تشدد، استری سے جلانے کا انکشاف

کراچی: شہر قائد کے علاقے ڈیفنس میں چوری کے الزام میں گھریلو کمسن ملازمہ پر تشدد کا شرم ناک واقعہ پیش آیا ہے، ملازمہ کو استری سے جلایا گیا ہے، پولیس نے دو خواتین سمیت 5 افراد کو گرفتار کرلیا۔

اے آر وائی نیوز کی نمائندہ ربیعہ خان نے بتایا کہ کراچی کے علاقے ڈیفنس میں ڈاکٹر مریم نامی خاتون کے گھر یہ واقعہ پیش آیا جہاں کمسن گھریلو ملازمہ پر پانچ افراد نے بے انتہا تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

پولیس کے مطابق استری سے بچی کے جسم کے مختلف حصوں کو جلایا گیا ہے۔

درخشاں پولیس نے واقعے میں ملوث دو خواتین اور تین مردوں کو گرفتار کرلیا ہے، مزید کارروائی جاری ہے، ملازمہ کو میڈیکل کے لیے اسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں اس کی میڈیکولیگل رپورٹ تیار کی جائے گی۔

 

دوروز سے تشدد کا نشانہ بنایا جارہا تھا، متاثرہ بچی

تشدد کی شکار ملازمہ جویریہ نے اسپتال میں اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  مجھے 2 روز سے تشدد کا نشانہ بنایا جارہا تھا، ملازمہ کے مطابق مجھے بیلٹ اور چھریوں سے مارا گیا، تشدد کے بعد باجی کے دیور نے استری سے جلایا، کافی عرصے سے ڈاکٹر مریم  کے گھر کام کررہی تھی۔

پولیس اور والد نے مالکن کے گھر سے نکالا

ملازمہ نے بتایا کہ وجہ بتائے بغیر مجھے دو روز تک تشدد کا نشانہ بناتے رہے، کل رات پولیس اور والد نے مجھے مالکن کے گھر سے نکالا۔

ملزمان کو سزا ضرور ملے گی، ناصر حسین شاہ

واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے وزیر اطلاعات سندھ ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ ظلم کرنے والوں کو ضرور سزا ملے گی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں