شہری انتظامیہ نے کراچی میں 700 کتے مار دیے -
The news is by your side.

Advertisement

شہری انتظامیہ نے کراچی میں 700 کتے مار دیے

کراچی: شہرقائد کے جنوبی علاقے میں جاری ’کتا مار مہم‘ کے دوران شہری انتظامیہ نے 700 سے زائد کتے مار گرائے، جانوروں کے حقوق کے لیے سرگرم کارکنان نالاں ہوگئے۔

کراچی میونسپل اتھارٹی کے ترجمان جاوید ستار نے غیر ملکی خبررساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے دو روزہ ’ کتا مارمہم‘ میں 700 سے زائد کتے مارے جانے کی تصدیق کی ہے۔

صدرمملکت کے سیکیورٹی گارڈز نے کتے کو گولی ماردی*

یاد رہے کہ گزشتہ کچھ سالوں سے آوارہ کتوں کے خلاف مہم نا چلنے کے سبب شہر میں سگ گزیدگی کے واقعات میں بے پناہ اضافہ ہوگیا تھا، محض جناح اسپتال میں گزشتہ سال 6،500 افراد کو سگ گزیدگی کے بعد طبی امداد فراہم کی گئی تھی۔

جناح اسپتال کے شعبہ حادثات کی ڈائریکٹر سیمی جمالی کے مطابق رواں سال اس نوعیت کے 3،700 سے زائد کیسز درج ہوچکے ہیں ، واضح رہے کہ یہ اعدادو شمارکراچی کے صرف ایک سرکاری اسپتال کے ہیں جو کہ ظاہر کرتے ہیں کہ شہرقائد میں سگ گزیدگی کے واقعات بے پناہ بڑھ چکے ہیں۔

aaa

حکام کا کہنا ہے کہ شہر میں آوارہ کتوں کی صحیح تعداد کا علم نہیں تاہم یہ تعداد ہزاروں میں ہے اوران کتوں کا یوں سرعام پھرنا باعث تشویش ہے۔

دریں اثناء جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والے سماجی کارکنوں کا کہنا ہے کہ اس طرح جانوروں کا قتلِ عام درندگی ہے اور شہری انتظامیہ کی یہ حرکت انسانی اقدار کے منافی ہے۔

دوسری جانب ماہرین کا ماننا ہے کہ جانوروں کی آبادی کنٹرول کرنے کے جدید طریقہ کار اپنا کر آوارہ کتوں کی بڑھتی ہوئی آبادی پر قابو پایا جاسکتا ہے اور انہیں ایسی ویکسینز بھی دی جاسکتی ہیں جن سے یہ بے ضرر ہوجائیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں