The news is by your side.

Advertisement

کراچی : لیاقت آباد میں امام بارگاہ پر بم حملے کی تحقیقات، مقدمہ تاحال درج نہ ہوسکا

کراچی : لیاقت آباد میں امام بارگاہ پر بم حملے کی تمام پہلوؤں سے تحقیقات جاری ہے، تاہم واقعے کا مقدمہ تاحال درج نہیں کیا جاسکا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں لیاقت آباد میں امام بارگاہ پر بم حملے کی تحقیقات جاری ہے ، تاہم واقعے کا مقدمہ اب تک درج نہ ہوسکا، تفتیشی ذرائع کے مطابق حملے میں کالعدم تنظیم کے ملوث ہونے کے شواہد ملے ہیں، موٹرسائیکل سوار حملہ آور مجاہد کالونی کی طرف سے آئے تھے ، موٹرسائیکل پر پچھلی طرف بیٹھے حملہ آور نے بال بم پھینکا۔

تفتیشی زرائع کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں نے امام بارگاہ کی ریکی کی ہوئی تھی ،حملے میں لوڈ شیڈنگ کا بھی فائدہ اٹھایا گیا ،600 گرام بارودی مواد اور کیلیں استعمال کی گئیں۔

تفتیشی حکام کے مطابق عینی شاہدین کے مطابق حملہ آور سیاہ کپڑوں میں ملبوس تھے ،واقعاتی شواہد تحویل میں لیکر فارنزک لیب بھجوا دیے ہیں۔


مزید پڑھیں : ایف سی ایریا میں دستی بم حملہ،ایک بچہ جاں بحق، 21 افراد زخمی


دوسری جانب رات گئے اطراف کے علاقوں میں سرچ آپریشن کے دوران چالیس سے زائد مشتبہ افراد کو حراست میں لیکر پوچھ گچھ کی گئی۔

یاد رہے کہ گذشتہ روز شہر قائد کے علاقے ایف سی ایریا لیاقت آباد میں‌ امام بارگاہ پر دستی بم حملے کیا گیا ، جس کے نتیجے میں ایک بچہ جاں بحق جب کہ 21 افراد زخمی ہوگئے، جن میں 11 خواتین بھی شامل ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں