site
stats
سندھ

کراچی کے مسائل کے حل کیلئے عملی اقدامات کا آغاز کردیا، جام خان شورو

کراچی : وزیر بلدیات سندھ جام خان شورو نے کہا ہے کہ کراچی کے مسائل کے حل اور بالخصوص پانی، سیوریج اور صفائی ستھرائی کے انتظامات کو مؤثر بنانے کے لئے عملی اقدامات کا آغاز کردیا گیا ہے۔

رواں سال مون سون بارشوں کے فوری بعد کراچی کی میونسپل کارپوریشن اور تمام ڈسٹرکٹ کی میونسپل ایڈمنسٹریشن کے فوری طور پر اقدامات سے شہر کی اہم شاہراہوں اور سڑکوں سے پانی کی نکاسی ممکن ہوسکی ہے، جبکہ ماضی میں تین تین روز تک شارع فیصل اور دیگر ایم شاہرائیں بند رہتی تھیں۔

پانی کے تین منصوبوں سو اور 65 ملین گیلن پومیہ پانی اور کے فور منصوبوں کا آغاز کردیا گیا ہے، ان خیالات کا اظہارانہوں نے اپنی رہائش گاہ پر ملاقات کیلئے حافظ نعیم الرحمٰن کی زیر قیادت آنے والے جماعت اسلامی کے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر کراچی کے جنرل سیکرٹری عبدالوہاب، سیف الدین، مسلم پرویز، قاضی صدرالدین، خالد خان اور زاہد عسکری بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ انہوں نے صوبائی وزیر کو قرآن شریف کا تحفہ بھی پیش کیا۔

جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی اس شہر اور صوبے کو اوون کرنے والی جماعتیں ہیں اور ہم مل جل کر اس شہر اور صوبے کے مسائل کے حل کے لئے اقدامات کرنے کو تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اداروں میں سیاسی بنیادوں پر کی جانے والی بھرتیوں اور گھوسٹ ملازمین کے خاتمے کے بغیر اداروں کو بہتر انداز میں نہیں چلایا جاسکتا۔ صوبائی وزیر بلدیات اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کرتے ہوئے سیاسی اور گھوسٹ ملازمین کے خاتمے کے لئے اقدامات کو یقینی بنائیں۔

صوبائی وزیر نے ملاقات اور بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آج جو کراچی میں بارش کے بعد سیاست کررہے ہیں، ان کو یہ معلوم نہیں کہ گجر نالے میں 30 ہزار خاندانوں اور دیگر نالوں پر تجاوزات کس کے دور حکومت میں قائم ہوئیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میں رواں ہفتہ دو بار بارشوں کے بعد پوری کراچی اور ڈسٹرکٹ کی انتظامیہ سڑکوں پر موجود تھی اور انہوں نے دن رات کام کرکے شاہراہوں اور گلیوں سے پانی کی نکاسی کو یقینی بنایا۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top