The news is by your side.

Advertisement

لاہور قلندرز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد فتح اپنے نام کرلی

شارجہ: لاہور قلندرز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد کراچی کنگز کو 7 رنز سے شکست دے دی۔ 

تفصیلات کے مطابق شارجہ میں کراچی کنگز اور لاہور قلندرز کی ٹیموں کے مابین سنسنی خیز مقابلہ ہوا، لاہور قلندرز نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 8 وکٹوں کے نقصان پر مقررہ 20 اوور میں 179 رنز کا اسکور کیا۔ کراچی کنگز نے ہدف کے تعاقب میں آخری بال تک کا سامنا کیا تاہم اُسے 7 رنز سے شکست کا سامنا رہا۔

کراچی کنگز اننگز

بیسویں اوور کی آخری دو بالز پر 12 رنز درکار تھے، کراچی کنگز کی ٹیم نے آخری بال تک مقابلہ کیا اس لیے قلندرز کی ٹیم صرف 7 رنز سے فتح اپنے نام کرنے میں کامیاب ہوئی، انیسویں اوور کی پہلی بال پر عماد وسیم 6 رنز بنانے کے بعد رن آؤٹ ہوئے، بھوپارا بھی 5 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹے، محمد عامر نے اوور کی آخری گیند پر چھکا مار کر ٹیم کا مجموعی اسکور 162 تک پہنچایا۔

اٹھارویں اوور میں پولارڈ 8 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹے، سترہویں اوور میں کراچی کنگز کو ایک اور نقصان کا سامنا کرنا پڑا تاہم مجموعی اسکور میں اضافے کے بعد مجموعی اسکور 139 تک پہنچا۔ سولہوں اوور کی دوسری بال پر 39 رنز بنا کر پویلین روانہ ہوئے انہوں نے 39 گیندوں کا سامنا کیا۔ اوور کے اختتام پر ٹیم کا مجموعی اسکور چار وکٹوں کے نقصان پر 132 تک پہنچا۔

پندرہویں اوور کی چوتھی بال پر کمار سنگاکارا 45 بالز پر 65 رنز کی شاندار اننگز کے بعد آؤٹ ہوکر پویلین لوٹے، نئے آنے والے بیٹسمین کیورین پولارڈ ہیں، اوور کے اختتام پر کراچی کنگز نے 124 رنز بنائے، چودہویں اوور میں ٹیم کا مجموعی اسکور 119 تک پہنچا۔ تیرہویں اوور میں 13 رنز اضافے کے بعد اسکور 113 تک پہنچا۔ آخری پانچ اوور میں 59 رنز کا اضافہ ہوا۔

بارواں اوور کراچی کنگز کے لیے بہت اچھا ثابت ہوا اس میں شعیب ملک نے دو شاندار چھکے مارے جبکہ کمار سنگاکارا نے اپنی ففٹی مکمل کی، 16 رنز اضافے کے بعد کراچی کنگز نے 100 رنز بھی مکمل کیے، گیارہویں اوور میں کمار سنگاکارا نے بال کو دو بار باؤنڈری کے باہر پھینکا اور اوور میں 12 رنز حاصل کیے جس کے بعد مجموعی اسکور 84 تک پہنچ گیا۔

دسویں اوور میں 12 رنز کا اضافہ ہوا اور اسکور 72 تک پہنچ گیا۔ شعیب ملک اور کپتان کمار سنگاکارا کے درمیان 50 رنز کی شاندار شراکت داری قائم ہوئی۔ نویں اوور میں مجموعی اسکور 60 تک پہنچا۔ آٹھویں اوور میں 4 رنز کا اضافہ ہوا، ساتویں اوور میں 6 رنز اضافے کے بعد اسکور 51 تک پہنچا۔

چھٹے اوور میں 17 رنز اضافے کے بعد مجموعی اسکور دو وکٹ کے نقصان پر 45 تک پہنچ گیا، پانچویں اوور میں کراچی کنگز نے 7 رنز بنائے۔ چوتھے اوور میں بابر اعظم 9 رنز بنانے کے بعد بلاول بھٹی کی گیند پر کیچ دے کر پویلین لوٹے، پانچویں اوور میں 11 رنز اضافے کے بعد مجموعی اسکور 28 تک پہنچا۔

تیسرے اوور میں 7 رنز اضافے کے بعد مجموعی اسکور 19 تک پہنچا، دوسرے اوور کی میں کرس گیل آوٹ ہونے کے بعد پویلین لوٹے تاہم مجموعی اسکور میں 10 رنز کا اضافہ ہوا جس کے بعد اسکور 12 رنز تک پہنچ گیا، کراچی کنگز کی جانب سے بابر اعظم اور کرس گیل نے کیا، سہیل خان کے پہلے اوور میں 2 رنز بن سکے۔

کراچی کنگز نے ابرار احمد کی انجری کے بعد میڈیم فاسٹ باؤلر عثمان خان کو ٹیم میں شامل کیا جبکہ کراچی کنگز نے اپنی حکمت عملی  بھی تبدیل کی تھی۔

ٹاس کے بعد کراچی کنگز کے کپتان نے کمار سنگاکارا نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آج کے میچ میں شائقین اچھی کرکٹ دیکھیں گے اور ہم پچھلے دو میچز کی غلطیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے فتح حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔

لاہور قلندرز اننگرز اوور بائی اوور 

بیسویں اوور میں محمد عامر نے قلندرز کے دو کھلاڑیوں کو پویلین روانہ کیا تاہم اوور کی آخری بال پر رن آوٹ کر کے قلندرز کی ٹیم کو آٹھویں کھلاڑی کو پویلین روانہ کیا، لاہور قلندرز نے کراچی کنگز کو جیت کے لیے 180 رنز کا ہدف دیا ہے۔

5

انسویں اوور میں 10 رنز اضافے کے بعد مجموعی اسکور 175 تک پہنچا جبکہ اٹھارویں اوور میں محمد رضوان سہیل خان کی بال پر ایل بی ڈبیلو ہوئے، اوور اختتام پر قلندرز نے پانچ وکٹ کے نقصان پر 165 رنز اسکور کرلیے۔

سترہویں اوور میں عثمان خان نے شاندار باولنگ کرتے ہوئے صرف دو رنز دیے، سولہوھیں اوور  میں 12 رنز اضافے کے بعد مجموعی اسکور 152 تک پہنچا، پندرہویں اوور میں مجموعی اسکور 140 تک پہنچا، چودہویں اوور میں عماد وسیم نے 6 رنز دیے جس کے بعد اسکور 132 تک گیا۔

تیروہیں اوور میں اسامہ میر نے فخر زمان کو پویلین بھیجا انہوں نے 35 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 56 رنز اسکور کیے، اوور کے اختتام پر قلندرز کا مجموعی اسکور 125 تک پہنچ گیا۔ بارہویں اوور کے اختتام پر قلندرز کا مجموعی اسکور 113 تک پہنچا۔

گیارہویں اوور کی چوتھی بال پر کامران اکمل 104 کے مجموعی اسکور پر 25 رنز کی اننگز کھیلنے کے بعد اسامہ میر کی گیند کو کھیلنے کی ناکام کوشش پر پویلین روانہ ہوئے تاہم اس اوور میں گیارہ رنز کا اضافہ ہوا جس کے بعد تین وکٹ کے نقصان پر مجموعی اسکور 106 تک پہنچا۔

دسویں اوور کے اختتام پر لاہور قلندرز نے 12 رنز اضافہ کیا اور مجموعی اسکور 96 تک پہنچایا، نویں اوور میں 11 رنز اضافے کے بعد اسکور 84 پہنچا۔آٹھویں اوور میں 9 رنز کا اضافہ ہوا جس کے بعد مجموعی اسکور 73 تک پہنچ گیا، ساتواں اووراسامہ میر نے کیا جس میں لاہور قلندرز کے کھلاڑی صرف 2 رنز ہی لے سکے، اوور کے اختتام پردو وکٹ کے نقصان پر مجموعی اسکور 64 تک جا پہنچا۔

چھٹے اوور کی پہلی بال پر سہیل خان نے روائے کو پویلین کی راہ دکھائی تاہم مجموعی اسکور میں 6 رنز اضافہ ہوا جس کے بعد لاہور قلندرز کا دو وکٹوں کے نقصان پر ٹوٹل اسکور 62 تک پہنچا، کراچی کنگز کی جانب سے پہلا میچ عثمان خان نے کرتے ہوئے 11 رنز دیے جس کے بعد قلندرز کا مجموعی اسکور 57 تک پہنچا، چوتھے اوور سہیل خان کو دیا گیا جس میں 14 رنز کا اضافہ ہوا اور قلندرز کا مجموعی اسکور 43 تک پہنچا، تیسرے اوو میں 7 رنز کا اضافہ ہوا جس کے بعد مجموعی اسکور 29 تک پہنچ گیا، محمد عامر نے تیسرا اوور پھینکا۔

عماد وسیم کے پہلے اور میچ کے دوسرے مجموعی اوور میں میکولیم گھومتی ہوئی گیند کو سمجھنے سے قاصر رہے اور بال ان کے بلے کے اندورنی کنارے کو چھو کر وکٹ میں گھس گئی، قلندر کا پہلا کھلاڑی 12 کے مجموعی اسکور پر پویلین لوٹا۔ نئے آنے والے بیٹسمین فخر زمان نے پہلی بال کو باؤنڈری پار کر کے اننگز کا پہلا چھکا مارا جبکہ قلندرز کا مجموعی اسکور 22 تک پہنچا۔

لاہور کی جانب سے اننگز کا آغاز مکیولم اور جیسن روئے نے کی، محمد عامر کے پہلے اوور میں قلندرز کا مجموعی اسکور 7 تک پہنچا۔

کراچی کنگز اسکواڈ 

post-1

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں