The news is by your side.

Advertisement

بلدیاتی اداروں کے اختیارات: پی ٹی آئی نے بھی اختیارات دو کانعرہ لگادیا

کراچی : سندھ میں بلدیاتی اداروں کے اختیارات کیلئے ایم کیوایم اور تحریک انصاف ایک پیچ پر آگئے۔ سندھ میں بلدیاتی انتخابات کے بعد اختیارات کا تنازعہ کھڑا ہوگیا۔

پی پی اورایم کیوایم میں ٹھن گئی،پی ٹی آئی نے بھی اختیارات دو کانعرہ لگادیا، ایم کیو ایم کے رہنما کنور نوید جمیل کا کہنا ہے کہ بلدیاتی امیدواروں کو اختیارات نہ ملے تو عوام سڑکوں پر ہوں گے.

جبکہ پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ ایم کیو ایم کے احتجاجی بیانات سمجھ سے باہر ہیں، مئیر اور چئیرمین کودوہزار تیرہ کے مطابق اختیارات ملیں گے۔

سندھ اسمبلی میں حق پرست قائد حزب اختلاف خواجہ اظہارالحسن نے پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ کی جانب سے بلدیاتی نمائندوں اور مئیر کو 2013ء کے بلدیاتی نظام کے مطابق اختیارات دینے کے بیان کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ پیپلز پارٹی کو ایم کیوا یم کی جانب سے اختیارات کے مطالبے کی بات سمجھ نہیں آ سکتی .

موجود ہ سندھ حکومت نے2013ء کا بلدیاتی نظام بے اختیار کرکے منظور کیا ہے جس میں مئیر کو اپنے شہر کی ترقی کیلئے کوئی اختیار حاصل نہیں ہے۔

انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم کے مطالبے پر مئیر کو 2013ء کے نظام کے تحت اختیارات دینے سے متعلق پیپلز پارٹی رہنما خورشید شاہ کا بیان کسی مذاق سے کم نہیں ہے۔

بلدیاتی اختیارات کے معاملے پر تحریک انصاف بھی ایم کیو ایم کے حامی ہے، پی ٹی آئی کے رہنما عارف علوی کا کہنا ہے کہ میئر کسی کا بھی ہو اختیار ملنے چاہئیں۔

یاد رہے کہ سندھ میں نئے قوانین کے تحت سارے اختیارات وزیر بلدیات کے پاس ہیں۔ اس صورت میں بلدیاتی نمائندوں کیلئے ووٹرز کی امیدوں پر پورا اترنا مشکل ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں