کراچی بدامنی کیس، 5 سالہ کارکردگی کی رپورٹ پیش -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی بدامنی کیس، 5 سالہ کارکردگی کی رپورٹ پیش

کراچی : سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں کراچی بدامنی کیس کی سماعت ہوئی، حکومت سندھ نے کارکردگی رپورٹ پیش کی، رپورٹ کے مطابق ستمبر دو ہزار تیرہ سے تاحال سترہ ہزار آپریشن میں اسی ہزار ملزمان گرفتار کئے، جن میں پندرہ سو سے زائد قتل کے ملزم اور ٹارگٹ کلرز شامل ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی بدامنی کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں پانچ رکنی لارجربنچ نے کی، سماعت کے دوران پولیس کارکردگی اور کیمروں کی تنصیب سے متعلق رپورٹ پیش کی گئی۔

چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے آئی جی سندھ کو پبلک مقامات کی سیکیورٹی بہتر بنانے کی ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ سیکورٹی گارڈ کی آڑ میں دہشتگرد بھرتی ہو رہے ہیں، اسپتالوں کے گارڈز کی اسکریننگ دی جائے۔

کوئٹہ دھماکے کے تناظر میں انکا کہنا تھا کہ پبلک مقامات کی سیکورٹی بہتر ہوتی تو اتنا نقصان نہ ہوتا۔

چیف سیکریٹری سندھ کی پیش کردہ رپورٹ کے مطابق دھماکہ خیز مواد کے چار سو پچاس اورغیر قانونی اسلحہ رکھنے والے پندرہ ہزار ملزمان گرفتار کئے گئے جبکہ پولیس کو غیر سیاسی کرنے کیلئے موثر اقدامات کئے گئے جبکہ ستمبر دو ہزار تیرہ سے جاری آپریشن میں سترہ ہزار کارروائیاں میں اسّی ہزار ملزمان گرفتار کیے گئے۔

رپورٹ کیمطابق سندھ میں دس لاکھ سے زائد افغانی باشندے مقیم ہیں، جن میں سے دو ہزار آٹھ سو چھیانوے افغان باشندوں کو گرفتار کیا گیا جبکہ اویس شاہ اغواء کیس میں چار افسران کیخلاف کاروائی شروع کردی گئی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں