The news is by your side.

Advertisement

دودھ کی قیمت 120روپے فی لیٹرمقررکرنے کا مطالبہ

کراچی : شہری انتظامیہ اور دودھ فروشوں کے درمیان مذاکرات مثبت رہے، دودھ فروشوں نے ریٹیل قیمت ایک سو بیس روپے فی لیٹر مقرر کرنے کا مطالبہ کردیا، فیصلہ دو فروری کو ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق دودھ کی پیداوار کم ہوگئی، ڈیری فارمرز بھینسوں کا لگانے والا ٹیکا اب عوام کو لگائیں گے، کراچی میں دودھ کی قیمتوں حوالے سے کمشنر آفس میں اجلاس منعقد ہوا۔

ایڈیشنل کمشنر کراچی کا کہنا تھا کہ دودھ کی قیمتوں میں اضافے کے حوالے تمام اسٹیک ہولڈرز تجاویز پیش کریں، اس پر تکنیکی بنیادوں جائزہ لیا جائے گا تاکہ عوام پر بوجھ نہ پڑے۔

اجلاس میں ڈیری فارمرز نے دودھ کی قیمتوں میں بیس روپے فی لیٹر اضافے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ دودھ کی پیداواری قیمت95روپے سے سو روپے فی لیٹر مقرر کی جائے۔

ہول سیلرز، مڈل مین اور رٹیلرز نے اپنا منافع شامل کرکے ریٹیل کی سطح پر دودھ کی قیمت120روپے فی لیٹر کرنے کا مطالبہ کیا۔

واضح رہے کہ دودھ کی موجودہ قیمت85روپے فی لیٹر ہے، ڈیری فارمرز اور دودھ فروشوں نے مجموعی طور پر30روپے فی لیٹر اضافہ مانگا ہے۔

اس حوالے سے دوددھ ریٹیلرز ایسوسی ایشن کے صدر حافظ نثار نے بتایا کہ دودھ کی قیمتوں میں اضافہ سے متعلق ایڈیشنل کمشنر کراچی نے تجاویز تحریری طور پر لے لی ہیں اور دودھ کی قیمتوں میں اضافہ کا فیصلہ دو فروری کے اجلاس میں کیا جائے گا۔

ڈیری فارمرز کا کہنا تھا کہ بھینسوں کو ٹیکوں کی پابندی کی وجہ سے تیس فیصد دودھ کی پیداوار کم ہوئی ہےاور پیداواری لاگت میں بھی اضافہ ہوا ہے۔


مزید پڑھیں: دودھ کی قیمت 100روپے لیٹر تک جا پہنچی


حافظ نثارکا کہنا تھا کہ2015میں عدالتی حکم کے باوجود دودھ کی قیمتوں میں کوئی اضافہ نہیں کیا گیا، بھینسوں پر ٹیکوں پرپابندی اور پیداواری لاگت میں اضافہ سے85روپے فی لیٹر دودھ بیچنا ممکن نہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں