The news is by your side.

Advertisement

نیب کا آغا سراج درانی کے گھر پر چھاپہ، اہم فائلیں‌ قبضے میں‌ لے لیں

کراچی: نیب نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کے گھر پر چھاپہ مارا ہے، دوران تلاشی نیب افسران نے اہم فائلیں قبضے میں‌ لے لیں، رینجرز کی نفری بھی موجود تھی۔

تفصیلات کے مطابق نیب نے آج صبح آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں گرفتار ہونے والے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کے گھر پر چھاپہ مارا ہے، دوران تلاشی نیب افسران نے ان کے گھر سے اہم فائلیں‌ قبضے میں‌ لے لیں، ان کے سیکیورٹی اہلکاروں نے نیب حکام سے بدتمیزی کی جس کے بعد نیب کی ٹیم دستاویزات دکھا کر ان کے گھر کے اندر داخل ہوگئی۔

رپورٹ کے مطابق چھاپے کے وقت آغا سراج درانی کے اہل خانہ کے گھر کے اندر موجود تھے جبکہ چار گھنٹے سے زائد کارروائی کے بعد نیب کی ٹیم اہم دستاویزات قبضے میں لے کر آغا سراج کے گھر سے روانہ ہوگئی۔

دوسری جانب اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کا طبی معائنہ مکمل کرلیا گیا ہے، ان کا طبی معائنہ نیب راولپنڈی کے دفتر میں کیا گیا، پولی کلینک کے میڈیکل آفیسر نے اسپیکر سندھ اسمبلی کا طبی معائنہ کیا۔

مزید پڑھیں: غیرقانونی اثاثہ جات کیس : اسپیکرسندھ اسمبلی آغاسراج درانی 3 روزہ راہداری ریمانڈ پر نیب کےحوالے

ذرائع کے مطابق ڈاکٹر نے آغا سراج درانی کو صحت مند قرار دے دیا ہے، ان کا میڈیکل سرٹیفکیٹ بھی نیب کے حوالے کردیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں گرفتار ملزم آغا سراج درانی کو نیب کی ٹیم آج رات کو اسلام آباد سے کراچی منتقل کردیا گیا جبکہ احتساب عدالت نے انہیں تین روزہ راہداری ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا ہے۔

نیب اعلامیہ میں اسپیکرسندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ نیب راولپنڈی اورنیب ہیڈکوارٹرز انٹیلی جنس ونگ کی معاونت سے گرفتارکیا گیا، ملزم پرآمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔

ذرائع کے مطابق قائم علی شاہ کی سربراہی میں صوبائی وزرا آغا سراج درانی کی رہائش گاہ پہنچ گئے، پی پی رہنماؤں میں مرتضیٰ وہاب، سعید غنی، نثار کھوڑو اور شہلا رضا شامل ہیں۔

سابق ڈپٹی اسپیکر سندھ اسمبلی شہلا رضا نے نیب تلاشی کے دوران آغا سراج درانی کے گھر کے اندر نہ دئیے جانے پر باہر ہی دھرنا دے دیا ہے۔

نیب ہیڈ کوارٹر میں طبی معائنہ، تفتیش کل کی جائے گی

ذرائع کے مطابق رات اور سفر کی وجہ سے آج آغا سراج سے پوچھ گچھ نہیں کی جارہی۔ صبح ان کو نیب عدالت میں پیش کیا جائے گا، ان پر سندھ اسمبلی کی نئی بلڈنگ تعمیر فنڈز میں بھی خردبرد کے الزامات شامل ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں