The news is by your side.

Advertisement

کراچی پولیس کا لاپتہ بچوں کی بازیابی میں ناکامی کا اعتراف، سندھ ہائیکورٹ برہم

کراچی : پولیس نے عدالت میں لاپتہ بچوں کی بازیابی میں اپنی ناکامی کا اعتراف کرلیا، عدالت نے حکم دیا کہ کچھ بھی کریں بچوں کو بازیاب کرائیں، ہمیں پیش رفت چاہئے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں کراچی سے لاپتہ بچوں کی بازیابی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی، اس موقع پر پولیس نے رپورٹ جمع کرائی جس میں اعتراف کیا گیا کہ اٹھارہ بچوں کی بازیابی میں کامیابی تاحال نہیں ملی ہے۔

ڈی آئی جی کرائم برانچ نے عدالت کو بتایا کہ بازیابی کی پوری کوشش کررہے ہیں، ایک بچی عاصمہ سے متعلق معلوم ہوا ہے کہ وہ بچی بلوچستان میں ہے۔

ڈائریکٹر ایف آئی اے نے اپنے بیان میں کہا کہ اینٹی ہیومن ٹریفکنگ سیل بچوں کی بازیابی کیلئے کام کررہا ہے۔ عدالت نے حکم دیا کہ باربارحکم کے باوجود بچوں کو بازیاب نہیں کرایاجارہا ، ہمیں پیشرفت چاہئے، کچھ بھی کریں بچوں کو بازیاب کرائیں۔

مزید پڑھیں: کراچی سے تمام بچوں کو بازیاب کراکر ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے: اے آئی جی سندھ

عدالت نے پولیس کو لاپتہ بچوں کا مکمل نادرا ریکارڈ ایف آئی اے کو دینے کا حکم دیتے ہوئے پولیس اور ایف آئی اے سے اکتیس جنوری تک پیش رفت رپورٹ طلب کرلی۔

واضح رہے کہ ساڑھے تین ماہ قبل اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے اے آئی جی سندھ ڈاکٹر امیر شیخ نے کہا تھا کہ سال2018میں اب تک اغواء کے 8 کیسز رپورٹ ہوئے، تمام آٹھ بچوں کو بازیاب کراکر ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ڈاکٹر امیر شیخ کا مزید کہنا تھا کہ 2018 میں اب تک 186 بچے لاپتہ ہوئے جن میں سے 90 فیصد مل گئے، اس کے علاوہ اغوا کا کوئی واقعہ ہے تو وہ ہماری اطلاع میں لایا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں