The news is by your side.

Advertisement

پولیس اہل کار اغوا اور بھتہ وصولی میں ملوث، ویڈیو ثبوت سامنے آ گیا

کراچی: شہر قائد کی پولیس کے اہل کار اغوا ور بھتہ وصولی میں ملوث نکلے ہیں، ایک ویڈیو ثبوت بھی سامنے آ گیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی پولیس اہل کار پیسے کمانے کے لیے ہر حربہ استعمال کرنے لگے ہیں، سچل تھانے کی حدود میں پہلے کم مدتی اغوا اور پھر بھتہ وصولی کا واقعہ سامنے آ گیا۔

ایک شہری ابراہیم علی نے سچل پولیس کے خلاف حکام بالا کو شکایت کی ہے کہ ان کے بڑے بھائی کو پولیس اہل کاروں نے اٹھایا اور پھر ایک شخص کے ذریعے بھتہ بھی وصول کیا گیا۔

درخواست گزار مدعی ابراہیم علی کا کہنا تھا کہ پولیس نے 10 اکتوبر کو ان کے گھر کے باہر چھاپا مارا تھا، جس میں سوسائٹی گیٹ پر بیٹھے ان کے بڑے بھائی اصغر علی کو پولیس اٹھا کر ساتھ لے گئی تھی۔

درخواست گزار نے اس واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی فراہم کر دی ہے، جس کے مطابق چھاپا رات 2 بج کر 21 منٹ پر مارا گیا تھا، ایک سفید ریوو گاڑی میں سچل تھانے کا افسر اور اہل کار بیٹھے ہوئے تھے، فوٹیج میں افسر اور اہل کاروں کو واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے۔

شہری نے بھائی کی رہائی کے لیے پولیس کو رشوت دینے کی فوٹیج بھی موبائل سے بنا کر پیش کر دی ہے، رشوت وصول کرنے والا مبینہ طور پر تھانے کے اعلیٰ افسر کا دست راست ہے

درخواست گزار ابراہیم نے بتایا کہ پولیس نے پہلے ان سے 40 ہزار روپے نقد لیے، جب کہ بقایا 10 ہزار روپے لینے کے لیے اہل کار کو ساتھ اے ٹی ایم پر بھیج دیا تھا۔

خیال رہے کہ اس کیس کے سلسلے میں شہری نے درخواست کے ساتھ سی سی ٹی وی اور موبائل فوٹیج بھی حکام بالا کو دی ہے، شہری نے مطالبہ کیا ہے کہ پولیس اہل کاروں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں