The news is by your side.

Advertisement

مولانا ڈاکٹرعادل خان اور ان کے ڈرائیور کے قتل کا مقدمہ درج

کراچی : ممتازعالم دین اورجامعہ فاروقیہ کےمہتمم مولانا ڈاکٹرعادل خان کے قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ، مقدمہ قتل ،انسداددہشت گردی کی دفعات کےتحت درج کیا گیا، مقدمہ درج ہونے کے بعد تفتیش سی ٹی ڈی منتقل کردی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ممتازعالم دین اورجامعہ فاروقیہ کےمہتمم مولانا ڈاکٹرعادل خان اور ان کے ڈرائیور کے قتل کا مقدمہ تھانہ شاہ فیصل کالونی میں درج کر لیا گیا ہے ، ایس ایچ او شاہ فیصل کالونی کی مدعیت میں مقدمہ قتل انسداد دہشتگردی ایکٹ کی دفعات کے تحت درج کیا گیا۔

ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ ہیلپ لائن ون فائیو پر رات پونے آٹھ بجے شمع شاپنگ سینٹر پر فائرنگ کی اطلاع ملی، رات سات بجکر پچاس منٹ پر پولیس جائے وقوعہ پر موجود تھی، تین ملزمان نے فائرنگ کی اور موٹرسائیکل پر فرار ہوئے۔

مزید پڑھیں : مولانا عادل خان کے اہلخانہ کا قتل کا مقدمہ درج کرانے سے انکار

ایف آئی آر کے مطابق دوملزمان نے پینٹ شرٹ، ایک نے شلوارقمیص پہن رکھی تھی جبکہ جائے وقوعہ سے نائن ایم ایم گولیوں کے پانچ خول ملے ، پولیس کا کہنا ہے کہ مقدمہ درج ہونے کے بعد تفتیش سی ٹی ڈی منتقل کردی گئی ہے۔

گذشتہ روز جامعہ فاروقیہ کے مہتمم ڈاکٹر مولانا عادل خان کے قتل کے خلاف ان کے اہل خانہ نے مقدمہ درج کرانے سے انکار کردیا تھا ، ذرایع کا کہنا تھا کہ اہل خانہ کے انکار کے بعد واقعے کا مقدمہ ایک ایچ او شاہ فیصل کی مدعیت میں درج کیے جانے کا امکان ہے۔

واضح رہے کہ 10 اکتوبر بروز ہفتہ کراچی کے علاقے شاہ فیصل کالونی نمبر 2 میں واقع شمع شاپنگ سینٹر کے قریب نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے ڈبل کیبن گاڑی پر فائرنگ کی تھی، جس کے نتیجے میں جامعہ فاروقیہ کے مہتمم مولانا عادل خان اور ڈرائیور مقصود احمد زخمی ہوئے تھے۔

بعد ازاں مولانا عادل اور ان کے ڈرائیور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں