کراچی میں قربانی کا تناسب 33 فیصد رہا -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی میں قربانی کا تناسب 33 فیصد رہا

کراچی: صوبائی وزیربلدیات سعید غنی کا کہنا ہے کہ کراچی کی لینڈ فل سائٹ پر 10 لاکھ سے زائد آلائشیں لائی گئیں، شہر میں قربانی کا تناسب تینتیس فیصد رہا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کے وزیر بلدیات نے میڈیا کانفرنس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ کراچی کی آبادی مردم شماری کے مطابق ایک کروڑ ساٹھ لاکھ ہے ، صرف ضلع وسطی میں 4 لاکھ 37 ہزار جانور ذبح کیے گئے ہیں۔

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ کراچی کی آلائشوں کو ٹھکانے لگانے کےلیے مختص کی گئی لینڈ فل سائٹ پر دس لاکھ سے زائد آلائشیں تلف کرنے کے لیے لائی گئیں ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ حالیہ خانہ شماری کے مطابق کراچی میں 30 لاکھ گھر ہیں جبکہ دس لاکھ سے زائد قربانیاں ہوئی ہیں ، جس کے مطابق شہر میں قربانی کا تناسب 33 فیصد رہا ہے۔

یا درہے کہ گزشتہ روز سعید غنی نے شہر سے نو لاکھ اسی ہزار آلائشیں اٹھانے کا دعویٰ کیا تھا جس پر شدید تنقید ہوئی تھی۔ میئر کراچی ، ایم کیو ایم کے خواجہ اظہار الحسن اور جماعت اسلامی کے حافظ نعیم الرحمن کا کہنا تھا کہ شہر میں تین لاکھ سے پانچ لاکھ جانوروں کی قربانی ہوئی ہے، سعید غنی غلط اعدادو شمار بیان کررہے ہیں۔

حافظ نعیم کا کہنا تھا کہ اتنی بڑی تعداد بتانے کا مقصد انہیں اٹھانے کے لیےمختص کی گئی رقم میں خرد برد کرنا ہے،کم از کم شہریوں کے مسائل تو حل کیے جائیں۔

دوسری جانب ٹینز ایسوسی ایشن کے سربراہ گلزار فیروز کا کہنا تھا کہ رواں سال کراچی سے ایک لاکھ قربانی کی کھالیں جمع کی گئی ہیں۔ یاد رہے کہ کھالیں جمع کرنے کا کام عید کے تین دن میں انجام دیا جاتا ہے اور اس کے بعد یہ سلسلہ انتہائی سست ہوجاتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں