The news is by your side.

Advertisement

کراچی میں کرنٹ لگنے سے جاں بحق 2 بچے سپرد خاک

کراچی: نارتھ ناظم آباد میں کے الیکٹرک کے ظلم کا شکار دونوں بچوں احمد اور عابد کر آہوں و سسکیوں میں سپرد خاک کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں دو دن کی بارش نے 15 افراد کی جان لے لی، نارتھ ناظم آباد کے دو دوست بھی بارش کے بعد کرنٹ لگنے سے ہلاک ہوگئے، دس سالہ احمد اپنے 12 سالہ دوست عابر کو بچاتے ہوئے جاں بحق ہوگیا، دونوں دوستوں کو آہوں اور سسکیوں میں سپرد خاک کردیا گیا۔

بچوں کی نماز جنازہ میں اہل محلہ کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور دعا کی کہ اللہ تعالیٰ دونوں بچوں کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے، بچوں کی دادی اپنے پوتے کو یاد کرکے رو رہی ہیں۔

بچوں کے والدین کا کہنا ہے کہ کے الیکٹرک کے خلاف مقدمہ درج کرائیں گے، اگر ہم نے خاموشی اختیار کی تو کل خدانخواستہ کسی اور کا لخت جگر جان سے ہاتھ دھو بیٹھے گا۔

مزید پڑھیں: 2 روز کے دوران کرنٹ لگنے سے جاں بحق افراد کی تعداد 15 ہو گئی

عینی شاہد کا کہنا تھا کہ بچوں کو دیکھا وہ سائیکل چلا رہے تھے کہ اچانک ایک بچہ بجلی کے پول سے کرنٹ لگنے کے سبب جاں بحق ہوا اس کا دوست اسے بچانے لگا تو وہ بھی کرنٹ لگ کر جاں بحق ہوگیا۔

انہوں نے کہا کہ بچوں کی لاشیں کئی گھنٹے تک جائے وقوعہ پر پڑی رہیں، پھر میں نے کے الیکٹرک کو کال کی لیکن کوئی نہیں آٰیا، اس کے بعد 15 پر کال کرکے پولیس کو بلایا گیا پولیس کی موبائل آئی اور انہوں نے ایدھی کو فون کیا ایدھی کے رضاکاروں نے بچوں کو پول سے الگ کیا۔

سندھ گورنمنٹ نے ہر بار کی طرح بارش سے ہلاکتوں کے الزامات کے الیکٹرک پر ڈالتے ہوئے اپنی جان چھڑا لی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں