site
stats
پاکستان

کراچی: شادی ہالز سے متعلق سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کا نیا قانون

کراچی: سندھ بلڈنگ کنٹرل اتھارٹی (ایس بی سی اے) نے شادی ہالوں کے لیے نیا قانون جاری کرتے ہوئے تمام مالکان کو ہدایت کی ہے کہ رفاہی پلاٹوں پر قائم شادی ہالز ختم کیے جائیں ورنہ انہیں مسمار کردیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے شادی ہالوں سے متعلق نیا قانون بنالیا ہے جس کے تحت رفاہی پلاٹوں پر قائم تمام شادی ہالز مالکان کو 6 ماہ میں ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے نئے ضابطے کے تحت رفاہی، رہائشی پلاٹوں پر تعمیر کیے گئے تمام شادی ہالز کو کمرشل ظاہر کرنا ہوگا اور اس پر فیس بھی لاگو ہوگی جبکہ کسی بھی پلاٹ کو  شادی ہالز کا رقبہ 2 ہزار گز اور اس کے سامنے کم  از کم 150 فٹ سڑک کا ہونا بھی ضروری ہے۔

ایس بی سی اے نے تمام شادی ہال مالکان کو پابند کیا ہے کہ ضابطے پر پورا نہ اترنے والے افراد ازخود اپنے ہالز مسمار کردیں وگرنہ 6 ماہ کے بعد ادارہ کارروائی کرے گا۔

ایس بی سی اے نے رہائشی پلاٹوں پر موجود شادی ہالز کو ریگولرائز کروانے کے خواہش مند مالکان کو پابند کیا ہے کہ وہ اپنے ہالز کی تصدیق کے لیے دستاویزات جمع کروائیں تاکہ انہیں این و سی جاری کیا جائے۔

شہری ہال مالکان سے سرکاری اجازت نامے طلب کریں

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے شہریوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ مستقبل میں کسی بھی پریشانی سے بچنے کے لیے بکنگ کے وقت شادی ہالز مالکان سے سرکاری اجازت نامے طلب کریں اور اگر کوئی نہ دے تو اُس ہال میں اپنی ذمہ داری پر بکنگ کروائیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top