کراچی، کے الیکٹرک کے خلاف تاجروں کی احتجاجی ریلی k electric
The news is by your side.

Advertisement

کراچی، کے الیکٹرک کے خلاف تاجروں کی احتجاجی ریلی

کراچی: میں کے الیکٹرک کے خلاف تاجروں نے جامع کلاتھ مارکیٹ سے بولٹن مارکیٹ تک احتجاجی ریلی نکالی، بجلی کے ٹیرف میں اضافے کے فیصلے کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں کے الیکٹرک کے خلاف تاجروں نے جامع کلاتھ سے بولٹن مارکیٹ تک ریلی نکالی، تاجروں کا کہنا ہے کہ کے الیکٹرک کی زائد بلنگ سے چھوٹے تاجروں کا کاروبار تباہ ہوکر رہ گیا ہے۔

تاجروں نے کہا کہ جعلی اور فراڈ بلنگ کے لیے کے الیکٹرک نے کئی افراد بھرتی کیے ہیں، عوام کو لوٹنے کے لیے 35 فیصد زائد رفتار سے چلنے والے میٹرز لگا دئیے ہیں۔

اسمال ٹریڈرز کے صدر محمود حامد نے کہا کہ کے الیکٹرک کی زائد بلنگ سے چھوٹے تاجروں کا کاروبار تباہ ہوکر رہ گیا ہے، زائد بلنگ کے ذریعے شہریوں سے دو سو ارب روپے لوٹ لئے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: کے الیکٹرک کی سرمایہ کاری کے باوجود بجلی کا بحران ہے، چیئرمین نیپرا

انہوں نے کہا کہ زیادتیوں اور زائد بلنگ کا سلسلہ بند نہیں کیا تو بل دینا چھوڑ کر سڑکوں پر آجائیں گے، کے الیکٹرک کو لگام نہ دی گئی تو کراچی کی پوری معیشت تباہ و برباد ہوجائے گی۔

تاجروں کا کہنا ہے کہ نیپرا نے کے الیکٹرک کو عوام کے 17ارب روپے واپس کرنے کا حکم دیا مگر کے الیکٹرک نے انکا ر کردیا ہے، تاجروں نے حکومت سے مطالبہ کیاکہ کراچی میں نا جائز بجلی کے ٹیرف میں اضافے کے فیصلے کو واپس لیا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں