The news is by your side.

Advertisement

کراچی کے تاجروں نے مارکیٹس اور دکانیں رات 9 بجے بند کرنے کا فیصلہ مسترد کردیا

کراچی : انجمن تاجران نے مارکیٹس اور دکانیں رات 9 بجے بند کرنے کے فیصلہ مسترد کردیا اور سندھ حکومت کے فیصلے کیخلاف مزاحمت کا بھی اعلان کردیا۔

تٖفصیلات کے مطابق صدرانجمن تاجران جاویدقریشی نے سندھ حکومت کی جانب سے مارکیٹس،دکانیں رات9بجے بند کرنے کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے کہا سندھ حکومت کے ایسے فیصلے تاجربرادری قبول نہیں کرے گی

جاویدقریشی کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کی طرف سے ہم پر فیصلہ مسلط کیاجارہاہے،سندھ حکومت کے فیصلے کیخلاف مزاحمت بھی کریں گے ، موجودہ حکومت نے تہیہ کرلیا ہے کہ عوام ،تاجر برادری کوجینے نہیں دینا۔

،صدرانجمن تاجران نے کہا کہ شدید گرمی میں خریدار مارکیٹ کا رخ نہیں کرتے، 9بجے بند کرنے کے فیصلے سے پہلے لوڈشیڈنگ زیرو کی جائے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے سندھ حکومت کو تجاویز دی تھیں اور سندھ حکومت سے ساڑھے 10بجے تک کا وقت مانگا تھا ، مارکیٹس ،کاروبار بند کریں گے تو کیسے کمائیں اور کھائیں گے۔

تاجررہنما جمیل پراچہ نے کہا کہ کاروبار نہ ہونے کے برابر ہے اور تاجر پریشانی میں مبتلا ہیں،تاجررہنما جمیل پراچہ

صدرالیکٹرانکس ڈیلرزایسوسی ایشن رضوان عرفان نے سندھ حکومت کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کمشنر آفس میں ملاقات میں تاجروں نے اپنا مؤقف دیا تھا، کہا تھالوڈشیڈنگ ختم کریں تو مارکیٹ 9بجے بند کریں گے۔

دکاندار پریشان ہیں،کاروبار کم ہے اور پیٹرول بھی مہنگا ہوگیاہے، ہم روزی کما رہے ہیں اور ساتھ میں ہر قسم کا ٹیکس بھی ادا کررہے ہیں جبکہ سرکاری افسران کےگھروں میں بڑی گاڑیاں ہیں ،مراعات بھی لے رہےہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں