The news is by your side.

Advertisement

شیر کی ہلاکت پر اہم افسر برطرف، سابق میئر نے تحقیقات کا مطالبہ کر دیا

کراچی: نایاب سفید شیر کی ہلاکت پر سینئر ڈائریکٹر زو اور سفاری خالد ہاشمی کو عہدے سے ہٹا دیا گیا، سابق میئر کراچی وسیم اختر نے شیر کی ہلاکت پر تحقیقات کا مطالبہ کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چڑیا گھر میں نایاب سفید شیر کی موت پر چڑیا گھر اور سفاری پارک کے سینئر ڈائریکٹر خالد ہاشمی کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے ان کی عہدے سے برطرفی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے، اور ان کی جگہ منصور قاضی کو سینئر ڈائریکٹر مقرر کر دیا گیا۔

شیر کی ہلاکت کے معاملے پر سابق مئیر وسیم اختر ایڈمنسٹریٹر کراچی پر پھٹ پڑے ہیں، انھوں نے کہا جو نایاب شیر میں اپنے دور نظامت میں صحت مند چھوڑ کر آیا تھا، چار مہینے میں انھوں نے اس کو مار دیا، وزیر اعلیٰ سندھ فوری طور پر شیر کی ہلاکت کے حوالے سے تحقیقاتی کمیٹی بنائیں۔

کراچی چڑیا گھر میں موجود نایاب نسل کا سفید شیر ہلاک

انھوں نے کہا تحقیقاتی کمیٹی میں ایڈمنسٹریٹر کو شامل تفتیش کیا جائے، پی پی چیئرمین بلاول بھی ایڈمنسٹریٹر سے پوچھیں وہ چار مہینے سے کیا کر رہا ہے، پیپلز پارٹی نے پہلے یہاں کے شہریوں کو ہلاک کیا اب جانوروں کی باری آ چکی ہے، زو کا ٹھیکے دار ان کو بار بار لکھ رہا ہے میرے بلز کلیئر کرو، بلز کلیئر نہ ہونے کے باعث گوشت، اور کھانے کی دیگر اشیا میں رکاوٹ آتی رہی، لیکن انھوں نے کوئی ایکشن نہیں لیا۔

وسیم اختر کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس کراچی میں ہیں، وہ اس معاملے کا نوٹس لیں، بہت پیارا اور اچھا شیر تھا، 13 دن سے بیمار تھا، لیکن کوئی اس کے پاس نہیں گیا، کوئی ڈاکٹر نہیں آیا، کوئی علاج نہیں ہوا، اس حوالے سے سب خبریں جھوٹی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں