The news is by your side.

Advertisement

کراچی میں اداروں کی نااہلی، گٹر ابلنے لگے، آلائشوں کے ڈھیر لگ گئے

کراچی: شہر قائد میں اختیارات کی جنگ اور اداروں کی نا اہلی کے سبب آلائشوں کے ڈھیر لگ گئے، کچرے کی ابتر صورت حال کے بعد شہر میں آلائشوں کے ڈھیر اور ابلتے گٹروں کا نیا مسئلہ پیدا ہو گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بارشوں کے بعد شہر میں جگہ جگہ گٹر ابلنے لگے ہیں، جب کہ عید الاضحیٰ پر قربانیوں کے بعد مختلف علاقوں میں آلائشوں کے ڈھیر لگ گئے ہیں۔

واٹر بورڈ کے عملے کی عدم دل چسپی اور غفلت کے باعث کراچی گٹروں کا شہر بنا نظر آتا ہے، متعدد علاقوں میں گٹر ابلے پڑے ہیں جب کہ سیوریج لائنز ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں۔

فیڈرل بی ایریا، گلشن اقبال میں سیوریج لائن بیٹھ گئی ہے، ادھر ایم ڈی واٹر بورڈ غائب ہیں، سیوریج لائن ٹوٹنے اور گٹر ابلنے سے علاقوں میں سیوریج کا پانی جمع ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کلین کراچی مہم کا افتتاح، سوچ بدلے بغیرکراچی کے مسائل حل نہیں ہوں گے

آلائشوں کے ڈھیر ڈسٹرکٹ سینٹرل، شرقی، ملیر، غربی، کورنگی، حسین آباد، لیاقت آباد دس نمبر اور کریم آباد میں لگے ہیں، عید کے تینوں دن محکمہ بلدیات، سالڈ ویسٹ آلائشیں اٹھانے میں ناکام رہے، دوسری طرف سندھ سالڈ ویسٹ کا دعویٰ ہے کہ 3 دن میں 42 ہزار ٹن آلائشیں اٹھا کر دفن کی گئی ہیں۔

معلوم ہوا ہے کہ شہر کے مختلف علاقوں میں ڈمپنگ پوائنٹ بنا کر آلائشیں پھینک دی گئی ہیں، ذرایع کا کہنا ہے کہ سندھ سالڈ ویسٹ کے پاس نہ افرادی قوت ہے نہ مشینری۔ ادھر ایم کیو ایم کے بلدیاتی نمائندوں نے سالڈ ویسٹ مینجمنٹ کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ عید سے قبل وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی نے کلین کراچی مہم کا آغاز کیا تھا جس کے تحت شہر میں جگہ جگہ لگے گندگی کے ڈھیر کو سب نے مل کر صاف کرنا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں