The news is by your side.

Advertisement

سینیٹ الیکشن: پی ٹی آئی رکن نے پارٹی فیصلے کے خلاف بغاوت کر دی

کراچی: سینیٹ انتخابات کے سلسلے میں پی ٹی آئی رکن سندھ اسمبلی کریم بخش گبول نے پارٹی فیصلے کے خلاف بغاوت کر دی ہے، انھوں نے اپنے اغوا ہونے کی بھی تردید کر دی۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے رکن سندھ اسمبلی کریم بخش نے کہا ہے کہ ان کو ووٹ نہیں دوں گا جنھوں نے سینیٹ انتخابات میں پیسے دے کر ٹکٹ لیا۔

کریم بخش گبول کا کہنا ہے کہ وہ ووٹ اپنی مرضی سے دیں گے، انھوں نے اس کے ساتھ یہ اعتراف بھی کیا کہ ڈھائی سال سے ہماری حکومت ڈیلیور نہیں کر سکی ہے۔

دوسری طرف سپریم کورٹ میں پی ٹی آئی امیدوار سیف اللہ ابڑو کے کاغذات نامزدگی کو چیلنج کر دیا گیا ہے، سپریم کورٹ میں شاہد علی رند نے الیکشن ٹریبونل کے فیصلے پر اپیل دائر کر دی۔

سیف اللہ ابڑو سینیٹ الیکشن میں حصہ لینے کے اہل قرار

درخواست میں کہا گیا ہے کہ سیف اللہ ابڑو ٹیکنو کریٹ کی نشست کے لیے معیار پر پورا نہیں اترتے، عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ سیف اللہ سینیٹ الیکشن لڑنے کے اہل نہیں ہیں، اس لیے انھیں نا اہل قرار دیا جائے۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی سندھ کے اراکین نے سیف اللہ ابڑو کو سینیٹ کے لیے پارٹی کی جانب سے ٹکٹ دیے جانے پر شدید اعتراض کیا گیا تھا، پی ٹی آئی رہنما لیاقت جتوئی نے الزام لگایا تھا کہ گورنر ہاؤس کے ڈرائنگ روم کے فیصلے پارٹی کے لیے نقصان دہ ہیں، پیراٹروپر سیف اللہ ابڑو کو 35 کروڑ میں سینیٹ ٹکٹ بیچا گیا۔

اس الزام پر سیف اللہ ابڑو نے اپنے وکیل کے ذریعے لیاقت علی جتوئی کو قانونی نوٹس بھیج دیا تھا۔

اپنے ایک ویڈیو بیان میں سیف اللہ ابڑو نے کہا تھا کہ پیپلز پارٹی نے آج تک کسی کو لاڑکانہ سے سینیٹ کا ٹکٹ نہیں دیا، لیکن خان صاحب کا مقصد ہے کہ لاڑکانہ سے کوئی آئے اور پیپلز پارٹی کو ٹف ٹائم دے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں